برازیل میں سمگلر بلی کی گرفتاری

آخری وقت اشاعت:  اتوار 6 جنوری 2013 ,‭ 04:19 GMT 09:19 PST

یہ واقعہ برازیل کی ریاست الوگواس کے شہر اراپیراکا میں واقع ایک جیل میں ہوا۔

برازیل کی ایک جیل میں ایک بلی کو گرفتار کیا گیا ہے جو جیل کے قیدیوں کے لیے مختلف اشیاء جیل میں سمگل کرتی تھی۔

اس بلی کو جب گرفتار کیا گیا تو اس کے بدن سے مختلف ممنوعہ اشیاء بندھی ہوئی تھیں۔

اس سفید بلی کو جیل کے مرکزی دروازے پر اس وقت گرفتار کیا گیا جب وہ جیل میں داخل ہو رہی تھی۔

یہ واقعہ برازیل کی ریاست الوگواس کے شہر اراپیراکا میں واقع ایک جیل میں ہوا۔

اس بلی سے جو اشیا برآمد ہوئیں ان میں سوراخ کرنے اور لکڑی یا لوہا کاٹنے کے لیے استعمال ہونے والے اوزار، موبائل فون اور اس کے چارجر اور ہیڈ فونز برآمد ہوئے۔

بلی کو گرفتار کرنے کے بعد شہر کے ایک جانوروں کی نگہداشت کے مرکز لے جایا گیا۔

اس جیل میں دو سو تریسٹھ قیدی رہتے ہیں۔

جیل کے ترجمان نے مقامی اخبار کو بتایا کہ ’یہ جاننا بہت مشکل ہے کہ اس حرکت کا زمہ دار کون ہے کیونکہ بلی بول نہیں سکتی۔‘

بلی سے برآمد ہونے والی اشیاء جیل سے فرار ہونے کی ایک مکمل کِٹ تھی۔

جیل کے حکام کا کہنا ہے کہ یہ اوزار جیل سے فرار ہونے میں مدد کے لیے استعمال کیے جا سکتے ہیں اور موبائل فون وغیرہ بیرونی دنیا اور دوسرے مجرموں سے رابطے کے لیے استعمال کیے جاتے ہوں گے۔

یہ واقع نئے سال کے آغاز پر ہوا لیکن اس کی تصاویر اب جاری کی گئی ہیں۔

یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ جانوروں اور پرندوں کو مجرموں نے اپنے مقاصد کے لیےاستعمال کیا اس سے پہلے دو ہزار دس میں کولمبیا میں ایجنٹس نے ایک طوطے کو گرفتار کیا تھا جو منشیات کے سمگلروں کے لیے کام کرتا تھا۔

کئی ممالک میں کبوتروں کو جاسوسی سے لے کر سمگلنگ کے جرم میں گرفتار کیا جا چکا ہے۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔