’صدر چاویس کی حلف برداری ملتوی کرنا قانونی‘

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 10 جنوری 2013 ,‭ 22:08 GMT 03:08 PST

اٹھاون سالہ صدر چاویس نے جمعرات کو صدارت کی اگلی مدت کے لیے حلف اٹھانا تھا

وینزویلا کی سپریم کورٹ نے فیصلہ دیا ہے کہ صدر اوگو چاویس کا اگلی مدت کے لیے حلف برداری کا عمل ملتوی کرنا قانونی ہے۔

اس سے پہلے ملک کی قومی اسمبلی نے بھی صدر چاویس کی جانب صدارتی حلف برداری کا عمل ملتوی کرنے کی درخواست منظور کر لی تھی۔

سپریم کورٹ کی صدر لویزا ایسٹالا مورلالس نے کہا ہے کہ یہ تصور کرنا نامعقول ہے کہ صدر چاویس کا کیوبا میں علاج غیر مجاز غیر حاضری ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملک کے آئین کے مطابق صدر کے عہدے کے لیے حلف برداری بعد میں کسی تاریخ کو ہو سکتی ہے اور صدر چاویس کا دوبارہ منتخب ہونا حکومت کے تسلسل کی ضمانت ہے۔

ٹیلی ویژن پر اپنے بیان میں سپریم کورٹ کی صدر نے ان سات مجسٹریٹس کے پینل کا متفقہ فیصلہ پڑھ کر سنایا جو سپریم کورٹ میں آئینی معاملات کو دیکھتے ہیں۔

صدر لویزا ایسٹالا مورلالس کے مطابق حلف اٹھانے کا معاملہ اور ایک نئے مینڈیٹ کی شروعات کے معاملے میں واضح فرق ہے۔

انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کے خیال میں حلف اٹھانا ایک اہم رسم قانون ہے لیکن صدارت کی نئی مدت کے لیے ناگزیر نہیں ہے۔

اٹھاون سالہ صدر چاویس نے جمعرات کو صدارت کی اگلی مدت کے لیے حلف اٹھانا تھا تاہم وہ کیوبا میں زیرِ علاج ہیں۔

گیارہ دسمبر کو ان کا کینسر کا چوتھا آپریشن ہوا تھا اور اس کے بعد سے وہ پھیپھڑوں کے شدید انفیکشن کا شکار ہیں۔

اس انفیکشن کے بعد انہیں سانس کی تکالیف کا سامنا ہے اور وہ گذشتہ ماہ آپریشن کے بعد سے عوام کے سامنے بھی نہیں آئے ہیں۔

حزب اختلاف کے رہنما اونریکو کیپریلا کا کہنا ہے کہ صدر چاویس اگلی مدت کے لیے حلف نہیں اٹھاتے ہیں تو اس صورت میں ملکی آئین کے مطابق قومی اسمبلی کے سپیکر آئندہ تیس دن کے اندر اندر نئے انتحابات کے انعقاد تک نگران صدر کے طور پر کام کریں۔

ان کا کہنا تھا کہ ’دس جنوری کو جب آئینی مدت ختم ہوتی ہے تو نئی آئینی مدت کا آغاز بھی ہوگا۔وینزویلا میں بادشاہت نہیں ہے اور نہ ہی یہ کیوبا ہے جہاں چند افراد بغیر کسی انتخابی عمل کے اقتدار دیگر افراد کو سونپ دیں۔ وینزویلا میں آئین کہتا ہے کہ یہاں الیکشن ہونے چاہیئیں۔‘

وینزویلا کے آئین کی رو سے اگر صدر اپنے اقتدار کی پہلے چار سال میں کسی وجہ سے اقتدار سے علیحدہ ہو جائیں تو تیس دن کے اندر دوبارہ انتخاب کروایا جائے گا۔

وینزویلا کے نائب صدر پہلے بھی کہہ چکے ہیں اوگو چاویس صدر کے عہدے پر فائز رہ سکتے ہیں اور حلف بعد میں بھی اٹھا سکتے ہیں۔

کیوبا جانے سے پہلے خود صدر چاویس نے اعتراف کیا تھا کہ ان کی بیماری کی نوعیت خاصی سنگین ہے۔ صدر چاویس کے کینسر کی تشخیص جون 2011 میں ایک سرجری کے دوران ہوئی تھی اور اٹھارہ ماہ میں اب تک ان کے چار آپریشن ہو چکے ہیں۔

صدر چاویس انیس سو ننانوے سے برسر اقتدار ہیں اور گذشتہ برس اکتوبر میں انہیں اگلے چھ سال کے لیے صدر منتخب کیا گیا تھا۔

یہ پہلا موقع ہے کہ حکام باقاعدگی سے صدر چاویس کی صحت کے بارے میں اطلاعات فراہم کر رہے ہیں جس سے مبصرین اندازہ لگا رہے ہیں کہ عوام کو کسی بھی صورتحال کے لیے تیار کیا جا رہا ہے۔

وینزویلا سے روانہ ہونے سے قبل اوگو چاویس نے پہلی مرتبہ اپنے جانشین کی بات کی۔انہوں نے کہا کہ اگر وہ واپس اقتدار میں نہیں آئے تو نائب صدر نکولس مدورو اقتدار سنبھالیں گے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔