لہسن کی سمگلنگ پر بین الاقوامی وارنٹ

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 12 جنوری 2013 ,‭ 15:20 GMT 20:20 PST
لہسن

ایف اے او کے مطابق دنیا میں سب سے زیادہ لہسن چین میں اگایا جاتا ہے۔

سویڈن نے غیر قانونی طور پر لہسن کی درآمد کرنے کے معاملے میں دو مشتبہ برطانوی شہریوں کے خلاف بین الاقوامی وارنٹ جاری کیے ہیں۔

یہ وارنٹ تقریباً تہتر کروڑ روپے کی مالیت کے لہسن کی غیر قانونی سمگلنگ کے لیے جاری کیے گئے ہیں۔

سویڈن کے سرکاری حکام کا کہنا ہے کہ اس نے یورپ میں سمگلنگ کے سب سے حیرت انگیز واقعے پر سے پردہ اٹھایا ہے لیکن لہسن کی سمگلنگ کا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے۔

دراصل یورپی یونین کے رکن ممالک میں لہسن کی درآمد پر نو اعشاریہ چھ فیصد محصول واجب الادا ہوتا ہے جس سے بچنے کے لیے لہسن کی غیر قانونی سمگلنگ کی جانے لگی ہے۔

واضح رہے کہ دنیا کا اسّی فیصد لہسن چین میں اگایا جاتا ہے اور یورپی یونین کے بہتیرے ممالک میں غیر قانونی طریقے سے استعمال کیا جانے والا بیشتر لہسن بھی وہیں سے آتا ہے۔

ناروے میں لہسن پر کوئی درآمد ٹیکس نہیں لگتا ہے، جس کی وجہ سے وہاں سے بڑے ٹرکوں میں بھر کر لہسن کی سمگلنگ پڑوسی ملک سویڈن اور یورپی یونین کے دیگر ممالک میں کی جاتی ہے۔

گزشتہ سال بھی لہسن کی سمگلنگ سے متعلق کچھ ایسے واقعات سامنے آئے جس میں اسمگلروں کو سزا دی گئی۔

لہسن

یوروپین یونین کے ممالک میں لہسن کی درآمد پر تقریبا دس اعشاریہ محصول لگایا جاتا ہے۔

يورپي اینٹی فراڈ آفس کے پوویل بوركووك کا کہنا ہے کہ ’انیس سو نوے کی دہائی سے ہی چین کے لہسن کی درآمد سے متعلق شکایتیں سامنے آنے لگی تھیں۔‘

ان کا کہنا ہے کہ سنہ دوہزار ایک میں یورپی یونین کے بجٹ پر بھی اس کا اثر نظر آنے لگا جب غیر ملکی لہسن پر نو اعشاریہ چھ فی صد کسٹم ڈیوٹی عائد کیے جانے کے ساتھ ہی بارہ ہزار یورو فی ٹن کا اضافی محصول بھی اس میں شامل کیا گیا۔

دراصل درآمد محصول لگا کر یورپی یونین اپنے رکن ممالک میں لہسن کی پیداوار کے تعلق سے اپنے مفادات کی حفاظت کرنا چاہتا تھا تاکہ چین کا لہسن ان کے گھریلو لہسن کے مقابلے میں مہنگا ہو جائے۔

دنیا بھر کے بازاروں میں چین کے لہسن چھائے ہوئے ہیں کیونکہ یا انتہائی کم قیمت پر دستیاب ہیں۔

اقوام متحدہ کی خوراک اور زراعت کی تنظیم (ایف اے او) کے مطابق چین میں سنہ دوہزار دس میں ایک کروڑ پچاسی لاکھ ٹن لہسن کی پیداوار ہوئی جو کہ دنیا بھر کے لہسن کی پیداوار کا تقریبا اسّی فیصد ہے۔

یورپی یونین میں لہسن کی پیداوار خاص طور پر سپین میں ہوتی ہے اور اس کے علاوہ اٹلی، فرانس، پولینڈ، ہنگری، رومانیہ اور بلغاريہ میں بھی اس کی کاشت ہوتی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔