شام: خودکش حملے میں درجنوں افراد ہلاک

آخری وقت اشاعت:  منگل 22 جنوری 2013 ,‭ 23:57 GMT 04:57 PST

اقوام متحدہ کے مطابق شام میں اب تک ساٹھ ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں

شام کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق وسطی صوبے حما میں ایک خودکش حملے میں درجنوں افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

شام کے سرکاری خبر رساں ادارے ثناء نیوز کے مطابق خودکش بمبار نے حکومت کی حامی فورسز کو نشانہ بنایا۔

شام میں حقوق انسانی کے کارکنوں کا کہنا ہے کہ سلمیہ شہر میں ہونے والے اس بم دھماکے میں درجنوں حکومت کے حامی اور عام شہری ہلاک ہوئے ہیں۔

ثناء نیوز اور حقوق انسانی کے کارکنوں نے تصدیق کی ہے کہ دارالحکومت دمشق کے مضافات میں پیر کو حکومتی سکیورٹی فورسز اور باغیوں کے درمیان جھڑپیں ہوئیں ہیں۔

دوسری جانب روس نے شام کے ہمسایہ ملک لبنان کے دارالحکومت بیروت میں دو ہوائی جہاز بھیجے ہیں تاکہ شام میں پھنسے اپنے شہریوں کو واپس ملک لایا جا سکے۔

روس کی وزارتِ ہنگامی صورتحال کے مطابق توقع ہے کہ منگل کو ایک سو کے قریب افراد ہوائی جہاز کے ذریعے واپس وطن پہنچ جائیں گے۔

روس شام کا حامی ہے اور اس نے مارچ سال دو ہزار گیارہ میں شروع ہونے والے تنازع کے دوران پہلی بار اپنے شہریوں کے انخلاء کے لیے ہوائی جہاز بھیجے ہیں۔

اقوام متحدہ کی حال ہی میں جاری ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق شام میں اب تک ساٹھ ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

شام کی سرکاری نیوز ایجنسی ثناء نیوز کے مطابق ایک کار میں سوار خودکش بمبار نے سلمیہ کے مرکزی علاقے میں کار کو دھماکے سے اڑا دیا اور اس کے نتیجے میں رہائشیوں سمیت کئی افراد ہلاک ہو گئے۔

برطانیہ میں شام کی صورتحال پر نظر رکھنے والے حقوق انسانی کے ایک گروپ کا کہنا ہے کہ بم دھماکہ حکومت کی حامی ملیشیا کے ہیڈ کوارٹر کے قریب ہوا اور اس واقعے میں کم از کم ملیشیا کے تیس کارکن ہلاک ہو گئے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔