عراق میں خودکش حملہ، تیس ہلاک، ستر زخمی

آخری وقت اشاعت:  اتوار 3 فروری 2013 ,‭ 09:26 GMT 14:26 PST
کرکوک

شدت پسند گرینیڈ پھینک رہے تھے لیکن عمارت تک پہنچنے سے پہلے ہلاک کر دیے گئے

عراق میں حکام کے مطابق ملک کے شمالی علاقے کے شہر کرکوک میں ایک خودکش کار بم حملے اور فائرنگ کے واقعات میں کم سے کم تیس افراد ہلاک اور ستر زخمی ہوئے ہیں۔

کرکوک کے پولیس آفیسر برگیڈیئر جنرل نتاح محمد صبر نے اے ایف پی کو بتایا کہ یہ حملہ اتوار کی صبح کے مصروف اوقات میں ہوا۔

اطلاعات کے مطابق عسکریت پسند پولیس یونیفارم میں تھے اور بندوقوں، گرنیڈوں اور خودکش بیلٹ سے لیس تھے۔ پہلے بم دھماکہ ہوا اس کے بعد ان لوگوں نے ہیڈ کوارٹر پر قبضے کی کوشش کی۔

شدت پسند گرنیڈ پھینک رہے تھے لیکن عمارت تک پہنچنے سے پہلے ہلاک کر دیے گئے۔

برگیڈیئر جنرل نتاح محمد صبر نے یہ بھی کہا کہ حملہ آوروں نے آس پاس کی عمارتوں کو کافی نقصان پہنچایا۔

.واضح رہے کہ حملہ کرکوک شہر میں واقع پولیس ہیڈکوارٹر پر کیا گیا ہے۔

ایک سرکاری اہلکار نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ عسکریت پسندوں نے پولیس ہیڈکوارٹر پر قبضہ کرنے کی کوشش کی لیکن ناکام رہے۔

بہر حال کسی گروپ نے ابھی تک اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

کرکوک میں مختلف نسلیں آباد ہیں اور یہ شہر عراقی حکومت اور کرد کے درمیان زمین اور تیل کے حقوق کی وجہ سے کشیدگی کا مرکز بنا ہوا ہے۔

دو ہفتے پہلے کردش ڈیموکریٹک پارٹی کے دفتر پر خودکش حملے میں دس افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

عراق میں حالیہ زیادہ تر تشدد کے واقعات کے لیے سنی مسلک سے تعلق رکھنے والے القائدہ سے منسلک شدت پسندوں کو مورد الزام ٹہرایا جاتا ہے۔

ان سب کے باوجود حالیہ دنوں میں نسبتا زیادہ امن دیکھا گیا ہے۔

کرد اس علاقے کو اپنے بڑے آذاد خطے میں شامل کرنا چاہتے ہیں جبکہ تر اور عرب اس کی موجودہ حیثیت میں کوئی تبدیلی نہیں چاہتے۔

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ شدت پسند اکثر عراقی اور کرد سکیورٹی فورسز کے درمیان اختلافات سے فائدہ اٹھا کر شہر میں بڑے حملے کر دیتے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔