تھائی لینڈ میں سترہ شدت پسند ہلاک

آخری وقت اشاعت:  بدھ 13 فروری 2013 ,‭ 10:39 GMT 15:39 PST
تھائی لینڈ

تھائی لینڈ کے جنوبی صوبوں میں مسلمان علیحدگی کی تحریک چلا رہے ہیں

تھائی لینڈ کی فوج کا کہنا ہے کہ اس کے فوجیوں نے ایک کارروائی میں سولہ شدت پسندوں کو ہلاک کر دیا ہے۔

ان شدت پسندوں کے بارے میں بتایا جا رہا ہے کہ انہوں نے ملک کے شورش زدہ جنوبی حصے میں ایک فوجی اڈے کو نشانہ بنایا تھا۔

یہ حملہ بدھ کی صبح ملیشیا کی سرحد سے ملحق تھائی لینڈ کے ناریتھاواٹ صوبے میں پیش آیا۔

تھائی لینڈ کی قومی سلامتی کونسل کے سیکرٹری جنرل لفٹیننٹ جنرل پاراڈورن پٹّاناتھابتر نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا، ’ابھی تک ہمیں یہ معلوم ہو سکا ہے کہ صبح ڈیڑھ بجے کم سے کم ساٹھ مسلح حملہ آوروں نے ہماری بحریہ کے ایک مرکز پر حملہ کیا، جن میں سے سترہ کو مار دیا گیا۔‘

واضح رہے کہ تھائی لینڈ کے تین جنوبی صوبے حالیہ دنوں میں شورش کا شکار رہے ہیں۔

مسلم اکثریت والے ان علاقوں میں علیٰحدگی پسندی کے واقعات میں گزشتہ دس برسوں میں ابھی تک لگ بھگ پانچ ہزار لوگ مارے جا چکے ہیں۔

خیا رہے کہ تھائی لینڈ کے جنوبی حصے میں سنہ دو ہزار چار میں علیٰحدگی پسند تحریک شروع ہوئی تھی۔

علیٰحدگی پسند مسلسل حملے کرتے رہتے ہیں، جو عام طور پر سڑک کے کنارے بم دھماکوں اور گولی باری کی شکل میں ہوتے ہیں۔

تھائی لینڈ کے تین جنوبی صوبے پٹّانی، یالا اور ناراتھیواٹ کو سیام میں ملا لیا گیا تھا۔ واضح رہے کہ ایک صدی پہلے تھائی لینڈ کا نام سیام ہوا کرتا تھا۔ اس علاقے کی اکثریت آبادی مسلمان ہے جبکہ کہ تھائی لینڈ ملک کی اکثریت بودھ مذہب کی پیروکار ہے۔

اس خطے میں تھائی حکومت نے دس ہزار فوجی اور پولیس تعینات کر رکھی ہے لیکن اس کے باوجود وہ ان علاقوں میں تشدد کی روک تھام میں ناکام ہے۔

اتوار کو پڑوسی صوبے یالا میں عسکریت پسندوں کے ایک مشتبہ حملے میں پانچ فوجی مارے گئے تھے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔