مصر: اڑنے والے غبارے کا حادثہ 19 سیاح ہلاک

آخری وقت اشاعت:  منگل 26 فروری 2013 ,‭ 08:28 GMT 13:28 PST

مصر میں ایک اڑنے والے گرم ہوا کے غبارے کے حادثے کے نتیجے میں انیس سیاح ہلاک ہو گئے ہیں۔

خبر رساں ادارے اے پی کے مطابق یہ حادثہ مصر کے جنوب میں واقع سیاحتی مقام الا قصر میں پیش آیا، ہلاک ہونے والوں میں اکثریت برطانوی اور فرانسیسی سیاحوں کی ہے۔

خبر رساں ادارے اے پی نے ایک سکیورٹی اہلکار کے حوالے سے لکھا ہے کہ انہوں نے ایک آگ کا بگولہ دیکھا جس کے بعد دھماکہ ہوا اور پھر غبارہ فضا سے کھیتوں میں گرتے ہوئے دیکھا۔

جائے حادثہ پر موجود اے پی کے ایک رپورٹر نے آٹھ لاشیں گنی ہیں۔

الا قصر کا مقام دریائے نیل کے کناروں پر واقع ہے اور اس کے قریب فرعونوں سے متعلق مصر کے سب سے مشہور آثارِ قدیمہ واقع ہیں۔

اسی وجہ سے یہ ایک بہت مشہور سیاحتی مقام ہے۔

گرم ہوا کے غباروں پر سیاحوں کو الا قصر کے علاقے میں سیر کروانے والی آٹھ کمپنیوں کے ایک ترجمان احمد عبود نے خبر رساں ادارے رائٹرز کو بتایا کہ غبارے پر اس وقت گیس کا دھماکہ ہوا جب وہ ایک ہزار فٹ کی بلندی پر پرواز کر رہا تھا۔

احمد عبود نے کہا کہ ’غبارے پر بیس افراد اور ایک غبارہ اڑانے والے سوار تھے جب دھماکہ ہوا تو انیس مسافر ہلاک جبکہ ایک سیاح اور غبارے اڑانے والے کارکن بچ گئے ہیں۔‘

گرم ہوا کے اڑنے والے غباروں پر سیاح الاقصر کے علاقے میں اکثر بادشاہوں کی وادی اور کرناک کے مندر کی سیر کے لیے آتے ہیں اور یہ سیاحوں میں بہت مقبول ہیں۔

ایک امریکی فوٹوگرافر کرسٹوفر مِچل جو کہ ایک اور غبارے میں اسی وقت تھے جب یہ دوسرا غبارہ فضا میں حادثے کا شکار ہوا۔

انہوں نے اس موقعے کی تصاویر بھی لیں اور بی بی سی کو بتایا کہ ’ہم قدیم آثار کے اوپر پرواز کے بعد مکئی کے کھیتوں میں اتر رہے تھے کہ ہم نے ایک دھماکہ سنا اور مجھے لگا کہ یہ اس غبارے میں دھماکہ ہوا جو میرے پیچھے تھا‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’مجھے پہلے اندازہ نہیں ہوا کہ کیا ہوا ہے یہ تو ہمیں اس وقت اندازہ ہوا جب ہم اترے کہ کیا واقعہ ہوا ہے۔‘

اپریل دو ہزار نو میں اسی طرح کے ایک حادثے میں الاقصر شہر ہی میں دو برطانوی خواتین سمیت سولہ افراد زخمی ہو گئے تھے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔