اسرائیل: مانع حمل ادویات دینے کی تحقیقات

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 1 مارچ 2013 ,‭ 02:13 GMT 07:13 PST

اسرائیل کے پارلیمان کی ایتھوپیا نژاد رکن پینینا تامانو شاتو اس مسئلے کی تحقیقات کے لیے دباؤ ڈالتی رہی ہیں

اسرائیل کی محکمۂ صحت ملک میں ایتھوپیا نژاد یہودی خواتین کو ان کی مرضی کے خلاف مانع حمل انجکشن لگانے کی تحقیقات کرے گی۔

ایک نئی کمیٹی ان الزامات کی تحقیقات کرے گی کہ واقعی یہ اقدامات ایتھوپیا نژاد اسرائیلی برادری کی آبادی پر قابو پانے کے لیے کیے گئے۔

گزشتہ دسمبر کو ایک اسرائیلی ٹی وی نے ایک ڈاکومینٹری میں مانع حمل دوا ڈیپو پرویرا کے استعمال کا ثبوت پیش کیا تھا۔اس ڈاکومینٹری میں یہ اشارہ دیا گیا تھا کہ ایتھوپیا نژاد خواتین کو ان کی مکمل رضامندی کے بغیر یہ انجکش لگوائے گئے تھے۔

اس وقت محکمۂ صحت کے حکام نے اس قسم کی کسی پالیسی کی موجودگی کو رد کردیا تھا۔

اسرائیل میں ڈیپو پرویرا مانع حمل کے لیے استعمال ہونے والے ادویات کے معیار کے مطابق نہیں ہے۔

تاہم حارٹس اخبار نے محکمۂ صحت کے ایک ترجمان کے حوالے سے بتایا کہ اب اس مسئلے پر گہری تحقیقات ہوں گی جس میں یہ معلوم کیا جائے گا کہ کسی ادارے کی طرف سے ایتھوپیا نژاد خواتین کو مانع حمل ادویات دینے کی ہدایات تو نہیں دی گئی تھی۔

تحقیقات کرنے والی کمیٹی میں محکمۂ صحت کے حکام، ایک آذاد ڈاکٹر اور ایتھوپیا نژاد برداری سے تعلق رکھنے والے ایک نمائندے کو شامل کرنے کا امکان ہے۔

ادھر یہ سوالات بھی اٹھائے جارہے ہیں کہ ایتھوپیا نژاد یہودی برادری کی آبادی میں گزشتہ دس سال میں پچاس فیصد کمی کی وجہ یہ ادویات ہیں یا نہیں؟

یہ الزامات بھی لگائے جا رہے ہیں کہ ایتھوپیا سے اسرائیل میں آنے والے خواتین کو ان کی مرضی کے خلاف یہ دوائی دی گئی اور انہیں اس کی سائڈ ایفکٹ یا نقصانات کے بارے تفصیل نہیں بتائی گئی تھی۔

اسرائیل کے پارلیمان کی ایتھوپیا نژاد رکن پینینا تامانو شاتو اس مسئلے کی تحقیقات کے لیے دباؤ ڈالتی رہی ہیں۔

یہ مسئلہ بڑا حساس ہے کیونکہ اسرائیل میں تقریباً ایک لاکھ بیس ہزار ایتھوپیا نژاد یہودی آباد ہیں جو بعض اوقات امتیازی سلوک کی شکایت کرتے ہیں۔

یاد رہے کہ اسے سے پہلے بھی اس قسم کے سکینڈل سامنے آئے ہیں۔ مثال کے طور پر 1996 میں اسرائیلی حکام نے اس بات کا اعتراف کیا تھا کہ ایتھوپیا نژاد یہودیوں کی طرف سے خون کے عطیات کو ایڈز کے خدشات کی وجہ سے ضائع کر دیا گیا تھا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔