لڑائی میں شام کا محکمۂ صحت تباہ

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 7 مارچ 2013 ,‭ 15:21 GMT 20:21 PST

رپورٹ کے مطابق ادویات فروخت کرنے والے مریضوں کا علاج کر رہے ہیں

بین الاقوامی امدادی تنظیم میدیسان سان فرنتئرز کے مطابق شام میں گزشتہ دو سال کی لڑائی کے دوران محکمۂ صحت ا بالکل تباہ ہو کر رہ گیا ہے۔

میدیساں سیان فرنتئرز(ایم ایس ایف) نے ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ ہسپتال، ڈاکٹر اور مریض براہ راست حملوں کی ضد میں رہے ہیں جبکہ بہت سا تربیت یافتہ طبی عملہ بیرونی ملک ہجرت کر گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق’ایک تہائی ہسپتال کام کرنے کے قابل نہیں رہے ہیں اور طبی علمہ روپوش ہونے پر مجبور ہو گیا ہے۔‘

ایم ایس ایف کے اس وقت دو سو کے قریب رضاکار باغیوں کے زیر قبضہ علاقے میں کام کر رہے ہیں۔

ایم ایس ایف نے حکومت سے متعدد بار درخواست کی ہے کہ انہیں وسیع علاقے میں کام کرنے کی اجازت دی جائے تاہم حکومت نے ان درخواستوں کو رد کر دیا۔

ایم ایس ایف کی ڈاکٹر میری پیری علائی نے کہا کہ’طبی امداد حملوں کی زد میں ہے، ہسپتالوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے اور طبی عملے کو پکڑا جا رہا ہے۔‘

رپورٹ کے مطابق ڈینٹسٹ معمولی سرجری کرنے پر مجور ہیں جبکہ ادویات فروخت کرنے والے مریضوں کا علاج کر رہے ہیں جبکہ نوجوان رضا کار نرس کے طور پر کام کر رہے ہیں۔

ایم ایس ایف کا کہنا ہے کہ زخمیوں کا علاج کرنے پر ڈاکٹروں کو ریاست کا دشمن قرار دیا جا رہا ہے اور فریقین ہسپتالوں کو جنگی حکمت علمی کے طور پر استمعال کر رہے ہیں۔

ایم ایس ایف کا مزید کہنا ہے کہ صحت کی سہولیات کو اب بھی فضائی کارروائیوں میں نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

بدھ کو اقوام متحدہ کا کہنا تھا کہ شام میں جاری تنازع میں اب تک دس لاکھ شامی بیرون ملک نقل مکانی کر چکے ہیں جبکہ پچیس لاکھ اندرون ملک نقل مکانی پر مجبور ہوئے ہیں۔

اس کے علاوہ اقوام متحدہ کے مطابق شام میں مارچ سال دو ہزار گیارہ سے جاری تنازع میں اب تک ستر ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔