اردن کے لیے مزید 20 کروڑ ڈالر کی امریکی امداد

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 23 مارچ 2013 ,‭ 21:48 GMT 02:48 PST

صدر اوباما مشرقِ وسطیٰ کے دورے کے سلسلے میں اسرائیل سے اردن پہنچے ہیں

امریکی صدر براک اوباما نے اردن کے لیے مزید 20 کروڑ ڈالر کی امداد کا اعلان کیا ہے تاکہ ملک میں شامی پناہ گزینوں کی بڑھتی ہوئی تعداد سے نمٹا جا سکے۔

امان میں بات چیت کے بعد صدر اوباما نے کہا کہ اگر یہ رقم کانگریس سے منظور ہو جائے تو اس سے مزید انسانی امداد فراہم کرنے میں مدد ملے گی۔

شام میں ساڑھے چار لاکھ کے قریب شامی پناہ گزین آباد ہیں جو 2011 میں وہاں تنازع شروع ہونے کے بعد سے چلے آئے تھے۔

اسی دوران اردن کے شاہ عبداللہ اردن کی سرحد بند کر رہے ہیں۔

صدر اوباما نے کہا کہ وہ کانگریس سے کہیں گے کہ وہ شامی پناہ گزینوں کی امداد کے لیے مزید رقم فراہم کرے۔

انھوں نے کہا کہ اس سے اردن شام سرحد پر واقع پناہ گزینوں کی کیمپوں میں بنیادی سہولیات کی فراہمی میں بہتری آئے گی۔

امریکہ شامی پناہ گزینوں کے لیے سب سے زیادہ عطیہ دینے والا ملک ہے۔

اقوامِ متحدہ کے ہائی کمیشن برائے پناہ گزینان کے مطابق شام میں حکومت اور باغیوں کے درمیان جاری جنگ سے بھاگ کر دوسرے ممالک میں پناہ لینے والے افراد کی تعداد اس ماہ کے شروع میں دس لاکھ تک پہنچ گئی ہے۔

صدر اوباما نے اردن میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انھیں شام کے بارے میں سخت تشویش لاحق ہے کیوں کہ ملک میں جاری جنگ کی وجہ سے شام دہشت گردوں کی پناہ گاہ بنتا جا رہا ہے۔

صدر اوباما مشرقِ وسطیٰ کے دورے کے سلسلے میں اسرائیل سے اردن پہنچے ہیں۔

انھوں نے کہا، ’دہشت گرد افراتفری کے ماحول میں، ناکام ریاستوں میں اور مقتدرہ کے فقدان والی جگہوں پر پھلتے پھولتے ہیں۔ اس لیے بطور بین الاقوامی برادری ہمارے لیے بہت ضروری ہے کہ ہم پائیدار سیاسی تبدیلی کے عمل میں معاونت کریں۔‘

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔