ملالہ اور جولی نے سکول فنڈ کا افتتاح کر دیا

Image caption ملالہ یوسفزئی کو گزشتہ سال اکتوبر میں طالبان نے فائرنگ سے نشانہ بنایا تھا

پاکستان کی وادی سوات میں طالبان کے حملے میں زخمی ہونے والی ملالہ یوسف زئی نے لڑکیوں کی تعلیم کے لیے قائم ملالہ فنڈ کے لیے پہلی امدادی رقم کا اعلان کر دیا ہے۔

ملالہ فنڈ کے ذریعے حاصل ہونے والی رقم پاکستان میں لڑکیوں کی تعلیم پر خرچ کی جائے گی۔

ملالہ یوسف زئی نے نیویارک میں منعقدہ ایک تقریب میں فنڈ کی پینتالیس ہزار ڈالر کی پہلی گرانٹ کا اعلان کیا۔

اس تقریب کی میزبانی ہالی وڈ کی اداکارہ انجلینا جولی نے کی۔ امریکی خبر رساں ادارے اے پی کے مطابق انجلینا جولی نے پاکستان میں لڑکیوں کی تعلیم کے لیے ’نئے ملالہ فنڈ‘ کے لیے دو لاکھ امریکی ڈالر دینے کا وعدہ کیا ہے۔

نیویارک میں منعقدہ ایک تقریب میں انجلینا جولی نے کہا کہ اس فنڈ کی انچارج ملالہ یوسف زئی ہوں گی۔

وومین ان دی ورلڈ کانفرس نیویاک کی تقریب میں پندرہ سالہ ملالہ یوسف زئی نے ایک ویڈیو پیغام میں کہا’ملالہ فنڈ کے لیے پہلی امدادی رقم کا اعلان ان کی زندگی کا سب سے پرمسرت دن ہے‘۔

عطیہ کیے جانے والے پہلی رقم پاکستان میں چالیس لڑکیوں کی تعلیم پر خرچ کی جائے گی۔

اس موقع پر ملالہ یوسفزئی نے کہا’ آئیں ان چالیس لڑکیوں کی تعلیم کو چالیس لاکھ لڑکیوں کی تعلیم میں بدل دیں۔‘

خیال رہے کہ حال ہی میں ملالہ یوسفزئی نے برطانیہ میں آپ بیتی لکھنے کا معاہدہ کیا ہے۔ملالہ کو کتاب لکھنے کا 30 لاکھ امریکی ڈالر معاوضہ دیا جائے گا۔

توقع ہے کہ ان کی آپ بیتی اس سال کے اواخر تک شائع ہو جائے گی، اور اس کا نام ’میں ملالہ ہوں‘ ہو گا۔ اس کتاب میں گذشتہ اکتوبر کو ملالہ پر سکول جاتے ہوئے ہونے والے حملے کی تفصیلات بیان کی جائیں گی

ملالہ کو سوات میں سکول جاتے ہوئِے طالبان نے نشانہ بنایا تھا۔ اس حملے میں زخمی ہونے کے بعد ان کا علاج پاکستان میں کیا گیا اور بعد میں برطانیہ منتقل کردیا گیا۔برطانیہ میں حال ہی میں ملالہ نے سکول جانا شروع کیا ہے۔

اسی بارے میں