یورپی یونین کے مستقبل پر مذاکرات

Image caption کیمرون سمجھتے ہیں کہ یورو زون کے مسائل حل کرنے کے لیے معاہدے میں تبدیلیوں کی ضرورت ہے

برطانوی وزیرِ اعظم ڈیوڈ کیمرون جرمن چانسلر آنگیلا میرکل سے ملاقات کرنے جرمنی کے دارالحکومت برلن جا رہے ہیں تاکہ یورپی یونین میں بڑے پیمانے پر تبدیلیوں کے مطالبے پر زور دیا جا سکے۔

برطانوی وزیرِ اعظم سمجھتے ہیں کہ یورپی یونین میں ایسی تبدیلیاں لائی جائیں جن کے تحت برطانیہ یا دوسرے ارکان یونین کے تمام فیصلوں کے پابند نہ رہیں۔

مذاکرات میں عنقریب ہونے والی جی ایٹ سربراہی ملاقات اور شام کے معاملے پر بھی گفتگو کی جائے گی۔

ایوانِ وزیرِاعظم نے کہا ہے کہ وہ فرانسیسی صدر فرانسوا اولاند کے ساتھ ملاقات کا دوبارہ وقت طے کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ دونوں رہنماؤں کی پیر کو ملاقات پیرس میں طے تھی لیکن سابق برطانوی وزیر اعظم مارگریٹ تھیچر کی موت کی وجہ سے یہ ملاقات منسوخ کر دی گئی تھی۔

اس سال کی ابتدا میں یورپ میں برطانیہ کے مستقبل کے بارے میں اپنے کلیدی خطاب میں کیمرون نے عہد کیا تھا کہ اگر قدامت پرست جماعت نے اگلے انتخابات جیت لیے تو وہ اگلے پارلیمان کے ابتدائی دور میں یورپی یونین میں شامل رہنے یا الگ ہونے کے معاملے پر ریفرینڈم منعقد کروائیں گے۔

اس ہفتے کے اوائل میں نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے ڈیوڈ کیمرون نے کہا تھا کہ بہتر یہی ہو گا کہ ’برطانیہ اصلاح شدہ یورپی یونین کا رکن بنا رہے‘۔

ڈیوڈ کیمرون کو فرانس اور جرمنی کی جانب سے یورپی یونین کا نیا معاہدہ کرنے کے سلسلے میں مزاحمت کا سامنا ہے۔

بی بی سی نیوز یورپ کے مدیر گیون ہیوٹ کہتے ہیں کہ اس دورے سے ظاہر ہوتا ہے کہ دونوں ملکوں کے درمیان اچھے تعلقات پائے جاتے ہیں اور یہ کہ جرمن چانسلر نے تہیہ کر رکھا ہے کہ برطانیہ کو یورپی یونین میں برقرار رکھا جائے۔

ہمارے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ اگرچہ یہ ملاقات نجی اور غیر رسمی نوعیت کی ہے، تاہم کیمرون یہ موقف پیش کریں گے کہ یورپی یونین کو اصلاحات کی ضرورت ہے۔

کیمرون سمجھتے ہیں کہ یورو زون کے مسائل حل کرنے کے لیے معاہدے میں تبدیلیوں کی ضرورت ہے، جس سے برطانیہ کے یورپ کے ساتھ ایک نئے تعلقات استوار ہو جائیں۔

کیمرون نے پانچ اخباروں کو مشترکہ انٹرویو دیتے ہوئے کہا، ’بعض اوقات یورپی یونین احکامات اور دخل اندازی کر کے اپنی حد سے تجاوز کر جاتی ہے‘۔

انھوں نے کہا، ’میرا خیال ہے کہ ایسا لچک دار یورپ بنایا جا سکتا ہے، جہاں ہم سب کو ایک کام ایک ہی انداز میں ایک ہی وقت پر نہ کرنا پڑے‘۔

اسی بارے میں