کینیڈا: دہشتگردی کا منصوبہ، دو افراد گرفتار

کینیڈا کے حکام کا کہنا ہے کہ دو غیر ملکیوں کو کینیڈا میں ٹرین پر دہشت گردی کے حملے کا منصوبہ بنانے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ ان افراد نے ایران میں القاعدہ کے عناصر کے ساتھ مل کر دہشت گردی کا منصوبہ بنایا تھا۔

تاہم ایران نے اس الزام کی تردید کی ہے کہ ایران میں القاعدہ نیٹ ورک موجود نہیں ہے۔

ایران کے اقوام متحدہ کے سفیر کے ترجمان کا کہنا ہے کہ القاعدہ کے حوالے سے ایران کی پالیسی واضح ہے۔ ’نہ تو القاعدہ ایران میں کوئی کارروائی کرسکتا ہے اور نہ ہی ایران سے دوسرے ممالک میں کارروائی کراسکتا ہے۔‘

حکام کے مطابق پیر کے روز مونٹریال سے تیس سالہ شہاب الصغیر اور ٹورونٹو سے پینتیس سالہ رائد جاسر کو گرفتار کیا گیا ہے۔

حکام کے مطابق وہ مبینہ طور پر ٹورونٹو میں وی آئی اے ٹرین کو دہشت گردی کا نشانہ بنانا چاہتے تھے لیکن یہ واضح نہیں ہے کہ وہ کب اس منصوبے پر عملدرآمد کرنا چاہتے تھے۔

کینیڈا کی پولیس کے مطابق یہ دونوں افراد کینیڈا کے شہری نہیں ہیں۔ ان کے بقول ایران میں القعدہ کے عناصر کے تعاون کے شواہد موجود ہیں تاہم ایرانی حکومت کے ملوث ہونے کا ثبوت نہیں ہے۔

ٹورونٹو پولیس کی چیف سپرنٹنڈنٹ جینیفر سٹریچن کا کہنا ہے کہ یہ دو افراد کسی مخصوص ٹرین کو نشانہ بنانے کا منصوبہ نہیں رکھتے تھے بلکہ ایک خاص روٹ کو نشانہ بنانا چاہتے تھے۔

تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ یہ منصوبہ ابتدائی مراحل میں تھا۔

اسی بارے میں