’کام کرنے کے ماحول کو بہتر کرنے کے لیے کارروائی‘

Image caption ای یو نے بنگلہ دیش میں مزدوروں کی حالات پر بھی ’تشویش‘ اظہار کیا ہے

یورپین یونین نے کہا ہے کہ وہ بنگلہ دیش کے کارخانوں میں کام کرنے کے ماحول کو بہتر بنانے کے لیے ’مناسب کارروائی‘ کرنے پر غور کر رہا ہے۔

ای یوکا کہنا ہے کہ اس کارروائی میں بنگلہ دیش کو یورپین یونین کی منڈی تک ڈیوٹی فری اور کوٹہ فری نظام کا استعمال بھی شامل ہو سکتی ہے۔

ای یو کی طرف سے بنگلہ دیش کے خلاف تجارتی سطح پر کارروائی کا اعلان گذشتہ ماہ بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں کپڑے بنانے والے کارخانوں کی عمارت منہدم ہونے سے 382 افراد کی ہلاکت کے بعد کیا گیا ہے۔

اس واقعے پر ای یو کے حکام نے گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں اس واقعے میں اموات پر افسوس ہے۔

انہوں نے کہا کہ ’اس تباہی کے پیمانے اور اس عمارت کی مجرمانہ طور پر تعمیر کے بارے میں آخر کار پوری دنیا کو پتہ چل کیا ہے۔‘

ای یو نے بنگلہ دیش میں مزدوروں کی حالتِ زار پر بھی ’تشویش‘ اظہار کیا ہے۔

ای یو کے خارجہ امور کی سربراہ کیترین ایشٹن اور ای یو کے تجارت کے کمشنر کارل ڈی گوچ کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ’ای یو مناسب کارروائی کرنے پر غور کر رہا ہے۔ اس میں جنرالائزڈ سسٹم آف پریفرنسز یا تجارتی ترجیحات کے نظام کا استعمال شامل ہے تاکہ ترقی پذیر ممالک سے مال کی سپلائی کی ذمہ دارانہ نظم و نسق کی حوصلہ افزائی کی جا سکے۔‘

دوسری طرف ڈھاکہ میں ہونے والے واقعے کے بعد دنیا بھر سےگارمنٹس بنانے والے کارخانوں میں کارکنوں کی حالت کو بہتر بنانے کے مطالبات سامنے آئے ہیں۔

کینیڈا میں خوردہ فروشوں نے نئے تجارتی اصول وضع کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

دریں اثنا کپڑوں کے بڑے کاروباری سٹور پریمارک نے کہا ہے کہ وہ منہدم عمارت کے متاثرین کو معاوضہ ادا کرے گا اور انہیں خوراک کی امداد فراہم کرے گا۔ پریمارک سٹور کو منہدم عمارت میں قائم فیکٹریوں سے کپڑے سپلائی ہوتے تھے۔

دوسری طرف اس عمارت کے مالک محمد سہیل رانا کو پولیس نے گرفتار کیا ہے۔ سہیل رانا سمیت اس عمارت میں قائم پانچ فیکٹریوں کے مالکان کے اثاثے بھی منجمد کیے گئے ہیں۔

انہیں لاپرواہی، غیر قانونی عمارت کی تعمیر اور عمارت میں دراڑیں نظر آنے کے بعد کارکنوں کو وہاں کام پر اکسانے کے الزامات کا سامنا ہے۔

دو انجنیئروں کو جنہوں نے اطلاعات کے مطابق اس عمارت کے محفوظ ہونے کا سرٹیفیکیٹ جاری کیا بھی گرفتار کیا گیا ہے۔

.

اسی بارے میں