افغانستان: تین برطانوی ہلاک

Image caption صوبہ ہلمند میں ہلاک ہونے والے فوجیوں کا تعلق برطانوی یونٹ رائل ہائی لینڈ فیوزلر سے تھا

افغانستان کے صوبے ہلمند میں تین برطانوی فوجی سڑک پر نصب بم پھٹنے سے ہلاک ہوگئے ہیں۔

نیٹو حکام نے بدھ کے روز تصدیق کی ہے کہ منگل کو صوبہ ہلمند کے علاقے نہر سراج میں معمول کی گشت پر مامور نیٹو افواج کی گاڑی سڑک پر نصب بم سے ٹکرا گئی۔اس حملے میں تین فوجی ہلاک ہوئے جن کا تعلق برطانوی یونٹ رائل ہائی لینڈ فیوزلر سے تھا۔

برطانوی وزارت دفاع نے کہا کہ صوبہ ہلمند جو طالبان مزاحمت کارروں کاگڑھ سمجھا جاتا ہے وہاں سکیورٹی کی حالت بہتر ہو رہی ہے۔ وزارت دفاع نے کہا ہے کہ اس طرح کے واقعات یاد دلاتے ہیں کہ برطانوی فوجیوں کے لیے افغانستان میں حالات کتنے خطرناک ہیں۔

ایساف نے منگل کے روز نیٹو فوجیوں کی ہلاکت کی تصدیق تھی لیکن یہ نہیں بتایاگیا تھا کہ ان فوجیوں کا تعلق کس ملک سے ہے۔

ابھی تک اس واقعے کی کسی نے ذمہ داری قبول نہیں کی ہے لیکن ماضی میں طالبان ایسے واقعات کی ذمہ داری قبول کرتے رہے ہیں۔

نیٹو افواج کا بڑا حصہ 2014 میں افغانستان سے چلا جائے گا۔ غیر ملکی افواج کے انخلا کے بعد سکیورٹی کی ذمہ داری افغانستان سیکورٹی اداروں کے حوالے کر دی جائے گا۔ مبصرین ان خدشات کا اظہار کر رہے ہیں کہ نیٹو افواج کی ملک سے روانگی کے بعد افغانستان میں سکیورٹی کی صورتحال انتہائی خراب ہو سکتی ہے۔