تھائی لینڈ: فائرنگ کے نتیجے میں چھ ہلاک

Image caption جائے وقوعہ پر ایک چھوڑے گئے تحریری نوٹ سے حملہ آوروں کی شناخت نہیں ہو سکی

تھائی لینڈ میں پولیس کا کہنا ہے کہ ملک کے شمالی علاقے میں فائرنگ کے نتیجے میں ایک بچے سمیت چھ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

کم از کم چار موٹر سائیکل سوار حملہ آورں نے بدھ کی رات پٹانی صوبے میں ایک گاؤں میں واقع دکان پر فائرنگ کی اور اس کے بعد بھاگ نکلے۔

اطلاعات کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں ایک چھوٹا بچہ بھی شامل ہے جبکہ اس واقعے میں ایک شخص زخمی ہوا ہے۔

خیال کیا جاتا ہے کہ تمام ہلاک ہونے والوں کا تعلق بدھ مت سے ہے۔

واضح رہے کہ یہ حملہ تھائی حکومت اور مسلمان علیحدگی پسندوں کے درمیان مذاکرات کے چند دن بعد ہوا ہے۔

جائے وقوعہ پر ایک چھوڑے گئے تحریری نوٹ سے حملہ آوروں کی شناخت نہیں ہو سکی لیکن اس میں کہا گیا تھا کہ یہ حملہ حملہ آوروں نے اپنے ساتھیوں کے قتل کا بدلہ لینے کے لیے کیا۔

بینکاک میں بی بی سی کے جونا فیشر کا کہنا ہے کہ شاید حملہ آور تقربیاً تین مہینے پہلے ایک فوجی بیس پر حملے کے دوران سولہ جنگجووں کی ہلاکت کی طرف اشارہ کر رہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ یہ حملہ تھائی حکومت اور علیحدگی پسند گروپ بی آر این کے درمیان شروع ہونے والے حالیہ امن مذاکرات کو متاثر کر سکتی ہے۔

خیال رہے کہ تھائی لینڈ کے مسلمان اکثریتی خطے میں 2004 سے علیحدگی پسند تحریک شروع ہونے کے بعد 5000 افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

ملائیشیا میں تھائی حکومت اور باغیوں کے درمیان مذاکرات کے دو دور ہو چکے ہیں۔مذاکرات کا حالیہ دور گذشتہ ہفتے ہوا تھا جس میں تھائی حکومت نے باغی گروپ کے رہنماوں پر زور دیا کہ اپنی ساکھ ثابت کرنے کے لیے وہ حملوں میں کمی کریں۔

تھائی لینڈ میں بدھ مت کے پیروکاروں کی اکثریت ہے لیکن ملک کے جنوبی صوبوں یالا، پٹانی اور ناراتیوات میں مسلمانوں کی اکثیریت ہے۔

خیال کیا جاتا ہے کہ زیادہ خودمختاری حاصل کرنے کے لیے مسلمان عسکریت پسند روزانہ کے حساب سے عام شہریوں اور سکیورٹی فورسز کو حملوں کا نشانہ بناتے ہیں۔

اسی بارے میں