نائیجیریا: بوکو حرام کے حملے میں 55 ہلاک

Image caption بوکو حرام کے دو سو کارکن بسوں اور پک اپس میں باما پہنچے

نائیجیریا کی فوج کا کہنا ہے کہ شدت پسند گروہ بوکو حرام نے ملک کے شمال مشرق علاقے میں حملہ کر کے پچپن افراد کو ہلاک جبکہ ایک سو پانچ قیدیوں کو رہا کرا لیا ہے۔

فوجی حکام کا کہنا ہے کہ یہ حملہ صبح سویرے بورنو ریاست کے علاقے باما میں کیا گیا۔

حکام نے بتایا کہ باما کا پولیس سٹیشن، فوجی بیرک اور سرکاری عمارات کو آگ لگا کر مکمل تباہ کردیا۔

بی بی سی کے نامہ نگار وِل روس کا کہنا ہے کہ یہ حملہ فوج کے اس تاثر کی نفی کرتا ہے کہ شدت پسندوں کے خلاف فوجی کارروائی کامیاب نہیں ہے۔

فوجی حکام کے مطابق بوکو حرام کے دو سو کارکن بسوں اور پک اپس میں باما پہنچے۔

’کچھ کارکنان نے فوجی بیرک پر حملہ کیا جس کو پسپا کردیا گیا۔ دس کے قریب شدت پسندوں کو مار دیا گیا اور متعدد کو گرفتار کر لیا گیا۔‘

حکام کے مطابق ’کچھ شدت پسند جیل میں داخل ہو گئے اور 105 قیدیوں کو رہا کرا لیا۔‘

فوجی حکام نے مزید کہا کہ حملہ آوروں میں سے چند نے فوجی یونیفارم پہن رکھی تھی اور شدت پسندوں کی یہ کارروائی پانچ گھنٹے تک جاری رہی۔

حکام کے مطابق شدت پسندوں کے ہاتھوں مارے جانے والوں میں بائیس پولیس اہلکار، 14 جیل وارڈن، دو فوجی اور چار شہری شامل ہیں۔

اسی بارے میں