اوکلاہوما : طوفان سے پانچ افراد ہلاک

Image caption ٹونیڈو ویلی میں ہر سال 12 ہزار سمندری طوفان آتے ہیں

امریکہ میں حکام کے مطابق ریاست اوکلاہوما میں سمندری طوفان کے نتیجے میں کم از کم پانچ افراد ہلاک ہو گئے ہیں جن میں ایک ماں اور بچہ بھی شامل ہے۔

خیال رہے کہ دو ہفتے قبل طوفانِ بادوباراں نے اوکلاہوما سٹی کے مضافاتی علاقے مور کو نشانہ بنایا تھا جس میں 24 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

سمندری طوفان نے جمعہ کی شام ریاست کے کئی علاقوں کو نشانہ بنایا اور بہت سے افراد اپنی کاروں میں پھنس گئے جبکہ ٹریفک کا نظام درہم برہم ہو گیا۔

اس طوفان کے نتیجے میں 60 ہزار سے زائد گھروں میں بجلی منقطع ہو گئی جبکہ شدید بارش کی وجہ سے سیلاب کی صورت حال پیدا ہوگئي۔

شدید بارش سے بہت سی گلیوں میں چار فُٹ سے زیادہ پانی جمع ہو گیا۔

پولیس کے ایک ترجمان نے کہا کہ جو ماں اور بچہ اس طوفان کی نذر ہو گئے وہ اپنی کار میں اوکلاہوما سٹی کی شاہراہ انٹر سٹیٹ 40 پر پھنس گئے تھے۔

اوکلاہوما کے چیف میڈیکل اکزامنر کے دفتر کی ایک ترجمان ایمی ایلیئٹ نے کہا دو ہلاکتیں یونین سٹی میں جبکہ ایک اوکلاہوما سٹی کے مغرب میں ہوئی۔

ترجمان نے مزید بتایا کہ طوفان کے نتیجے میں بہت سے افراد زخمی ہوئے ہیں جن میں سے پانچ کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔

جن لوگوں نے طوفان سے بچنے کے لیے سڑکوں کا سہارا لیا ان میں 30 سالہ برانڈی وینالفن بھی تھیں۔

انھوں نے خبر رساں ایجنسی رائٹرز کو بتایا ’مجھے جس چیز نے سب سے زیادہ خوفزدہ کیا وہ میرا ٹریفک میں پھنس جانا اور سائرن کا بند ہوجانا تھا‘۔

انھوں نے کہا ’ہم نے شمال کی جانب روشنی کی چمک دیکھی اور میں نے پوری قوت سے گاڑی چلانی شروع کر دی، جبکہ دوسرے افراد نے خوف کے عالم میں اپنی گاڑیاں گھاس پر چلانی شروع کر دیں‘۔

اوکلاہوما سٹی کے میئر میک کورنیٹ نے کہا ’ مجھے اس بات کی خبر نہیں کہ زیادہ تر افراد نے سڑکوں کا رخ کیوں کیا۔ یہ ہماری توقعات سے زیادہ تھا۔ اس طوفان میں ہر فرد مختلف طور پر متاثر ہوا اور اس کے نتیجے میں انتہائی خطرناک صورت حال پیدا ہوگئی‘۔

انھوں نے مزید کہا ’میرے خیال سے مور میں جو کچھ ہوا ہم سب اس سے اب تک نکل نہیں پائے۔ ہم ابھی تک بچوں اور متاثرین کو دفنا رہے تھے اس لیے ہمارے احساسات ابھی بھی مضبوط تھے‘۔

موسمیات کے ماہرین نے کہا کہ اس سے قبل مئی میں آنے والے طوفان کے مقابلے میں اس طوفان کی شدت کم تھی۔

اوکلاہوما امریکہ کا مغربی وسط کا حصہ ہے جسے ’ٹورنیڈ ویلی‘ یعنی طوفانی کی گلی کہا جاتا ہے۔ یہاں ہر سال 1200 سمندری طوفان آتے جن میں سے زیادہ تر چھوٹے ہوتے ہیں۔

اسی بارے میں