’باغیوں سے امن مذاکرات خطرے میں پڑ سکتے ہیں‘

Image caption صدر نے یونین کے رہنماؤں کو دھمکیاں دینا ’ناقابلِ قبول‘ قرار دیا

کولمبیا کے صدر جوآن مینئل سانتوس نے کہا ہے کہ فارک باغیوں سے منسوب دھمکی آمیز بیان کی وجہ سے حالیہ امن مذاکرات خطرے میں پڑ سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ فارک باغیوں سے منسوب ایک بیان سامنے آیا ہے جس میں ملک کے ٹریڈ یونینوں کے رہنماؤں کو موت کی دھمکیاں دی گئی ہیں اور کہا گیا ہے کہ سی جی ٹی (جنرل کنفیڈیریشن آف ٹریڈ یونین آف کولمبیا) کے صدر اور تنظیم کے دوسرے رہنما عسکری کارروائی کے لیے جائـز حدف ہیں۔

صدر جوآن مینئل سانتوس نے کہا کہ اس بیان کی حقیقت کی تصدیق کرنا ضروری ہے۔

خیال رہے کہ فارک باغیوں اور حکومت کے درمیان مذاکرات گذشتہ سال کیوبا کی دارالحکومت ہوانا میں شروع ہوئے تھے جس کے نتیجے میں گذشتہ مہینے دونوں کے مابین ایک سمجھوتہ طے پایا تھا۔

صدر سانتوس نے صحافیوں کو بتایا کہ ’میں یقین کرنا چاہتا ہوں کہ یہ بیان حقیقت پر مبنی نہ ہوکیونکہ اس موقع پر ان افراد کو جو کارکنوں کے حقوق کی جنگ لڑ رہے ہیں نشانہ بنانا جائز قرار دینے کا کوئی جواز نہیں بنتا ۔‘

انہوں نے کہا کہ ’اگر اس بیان کی دستاویز حقیقت پر مبنی ثابت ہوتی ہے تو’اس سے یقیناً امن کے عمل کو خطرہ لاحق ہو جائے گا۔‘

صدر نے یونین کے رہنماؤں کو دھمکیاں دینا ’ناقابلِ قبول‘ قرار دیا۔

جی سی ٹی کے صدر جولیو راپرٹو گومیز نے کہا ہے کہ ان کی تنظیم کو ماضی میں بھی فارک باغیوں نے دھمکیاں دیں تھیں۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ باغی سمجھتے ہیں کہ یہ ٹریڈ یونین صدر سانتوس کے بہت قریب ہے۔

کولمبیا کا سب سے بڑا گوریلا گروپ سمجھے جانے والے فارک باغیوں نے حکومت کے ساتھ پہلی دفعہ آمنے سامنے ہونے والے مذاکرات گذشتہ نومبر میں شروع کیے تھے۔

حکومت کی طرف سے باغیوں پر مذاکرات جلد از جلد پائے تکمیل تک پہنچانے کے لیے دباؤ تھا۔

حکومت کی جانب سے مذاکراتی ٹیم کے سربراہ ہوم برٹو ڈی لا کالی نے کہا ہے کہ مذاکرات اس سال کے آخر تک مکمل ہونے چاہیے جس میں باغی دہائیوں سے جاری مسلح جدوجہد کو ترک کرکے امن کوششوں میں شامل ہوجائیں گے۔

لیکن دوسری طرف باغیوں کا کہنا ہے کہ مسائل گمبھیر ہیں اور اسے جلدی میں حل نہیں کیا جا سکتا ہے۔

فارک باغیوں کے مذاکراتی ٹیم کے سربراہ آئیوان مارکیس نے کہا کہ ’اگر ہم پائیدار امن چاہتے ہیں تو ہمیں ان مسائل کو گہرائی اور خوش اسلوبی سے حل کرنا ہوگا۔‘

اسی بارے میں