افغانستان: بین الاقوامی افواج کے چار اہلکار ہلاک

افغانستان میں حکام کے مطابق افغان فوجی کی وردی میں ملبوس ایک مسلح شخص کے حملے میں بین الاقوامی افواج کے تین اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں۔

افغانستان میں تعینات بین الاقوامی افواج ایساف کے مطابق بظاہر یہ ’سکیورٹی فورسز کے اندر سے حملہ‘ تھا۔

حکام کے مطابق پاکستان کی سرحد سے متصل صوبہ پکتیا میں ہونے والے حملے میں بین الاقوامی افواج کے تین اہلکار ہو گئے، تاہم ہلاک ہونے والے فوجیوں کی شہریت کے بارے میں نہیں بتایا گیا۔

دریں اثنا اطالوی حکام کے مطابق فرح صوبے میں ہونے والے ایک حملے میں ایک اطالوی فوجی ہلاک ہو گیا۔

اطالوی وزارتِ دفاع کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق افغان فوج کی تربیت میں مصروف عسکری مشیروں کا ایک قافلہ جب واپس فوجی کیمپ کی جانب لوٹ رہا تھا تو اس پر’ افغانستان کے دشمنوں‘ کے حملے میں ایک فوجی ہلاک اور تین زخمی ہو گئے۔

اطالوی خبر رساں ادارے اینسا کے مطابق ابتدائی تحقیقات کے مطابق افغان فوج کی وردی میں ملبوس ایک مسلح شخص نے گاڑی پر دستی بم پھینکا تھا۔

صوبہ پکتیا میں ذرائع نے بی بی سی کو بتایا کہ افغان فوج کی ودری میں ملبوس ایک مسلح شخص کی فائرنگ کے بعد بین الاقوامی افواج نے جوابی فائرنگ کی۔

ایساف حکام ان واقعات کو ’گرین آن بلیو‘ حملے کہتے ہیں اور ان واقعات میں افغان فوج کی وردی میں ملبوس افراد اپنی بندوقوں کا رخ اتحادی فوجیوں کی جانب کر دیتے ہیں۔ گرین سے مراد افغان فوج، جب کہ نیلے سے مراد نیٹو فوج ہے۔

حکام نے اس نوعیت کے واقعات کو روکنے کے لیے سخت اقدامات کیے ہیں، لیکن اکا دکا واقعات اب بھی عام ہیں۔

اس طرح کا آخری واقعہ تقریباً ایک ماہ پہلے پیش آیا تھا۔

اسی بارے میں