مرے ہوئے شخص نے الیکشن جیت لیا

لینن کربالیڈو
Image caption 2010 میں اس وقت ان کی موت کا سرٹیفکٹ پیش کیا گیا تھا جب ان کے خلاد اجتماعی ریپ کے معاملے میں تحقیقات کی جا رہی تھی

حکام کا کہنا ہے کہ میکسیکو میں ایک ایسے شخص نے اوکساکا ریاست میں میئر کا الیکشن جیتا ہے جسے 2010 میں مردہ قرار دیا گیا تھا۔

لینن کربالیڈو نام کے اس شخص نے ’یونائٹڈ فار ڈویلپمنٹ‘ کے نعرے کے ساتھ اپنی تصویر لگا رکھی تھی اور شہر کے میئر کا الیکشن جیتا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ لینن کربالیڈو کے گھر والوں نے 2010 میں اس وقت ان کی موت کا سرٹیفکٹ پیش کیا تھا جب ان کے خلاف اجتماعی ریپ کے معاملے میں تحقیقات کی جا رہی تھی۔

اب اس بات کی تحقیقات کی جا رہی ہے کہ کیا انہوں نے اپنی موت کا جعلی سرٹیفکیٹ پیش کیا تھا۔

انہوں نے بائیں بازو کی جماعت ڈیمو کریٹک ریوولیشنری پارٹی سے الیکش لڑا تھا اب ان کی جماعت کا کہنا ہے کہ انہوں نے پارٹی کو بیوقوف بنایا ہے اور لینن کربالیڈوکو میئر کا عہدہ سنبھالنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

پارٹی کا کہنا ہے کہ جس وقت انہوں نے پارٹی کی رکنیت کی درخواست دی تھی تو اپنی پیدائش کا سرٹیفکیٹ اور حلف نامہ پیش کیا تھا کہ ان کا کوئی مجرمانہ ریکارڈ نہیں ہے۔

مقامی میڈیا کے مطابق ان کی موت کے سرٹیفکیٹ میں کہا گیا تھا کہ ان کی موت قدرتی تھی اور وہ ذیابیطس کے سبب کوما میں چلے گئے تھے۔

اس سرٹیفکیٹ پر ڈاکٹر کے دستخط تھے اور یہ شہر کے مقامی دفتر سے جاری کیا گیا تھا۔

اب لینن کربالیڈوپر دھوکہ دہی کے الزامات ہیں اور حکام کا کہنا ہے کہ ان کے خلاف اجتماعی ریپ کا مقدمہ بھی دوبارہ شروع کیا جا سکتا ہے۔

اسی بارے میں