انٹرپول کا دہشت گردی کے خطرات پر سکیورٹی الرٹ

Image caption انٹرپول نے اپنے رکن ممالک کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ترجیحی بنیادوں پر دہشت گردی سے متعلق معلومات پر کارروائی کریں

عالمی پولیس تنظیم انٹرپول نےگزشتہ مہینے میں عراق، لیبیا اور پاکستان میں جیلوں پر حملوں کے نتیجے میں فرار ہونے والے دہشت گردوں کے پیش نظر اپنے رکن ممالک کو نگرانی کے عمل کو تیز کرنے کے لیے خبردار کیا ہے۔

فرانس کے شہر لیون سے جاری کیےگئے بیان کے مطابق ان جیلوں پر حملوں میں القاعدہ کے ملوث ہونے کا شبہ ہے جن میں کئی دہشت گرد اور دوسرے جرائم پیشہ افراد فرار ہونے میں کامیاب ہوئے۔

اسی بیان کے ذریعے انٹرپول نے اپنے ایک سو نوے ارکان کے تعاون کی درخواست کی ہے کہ وہ اس بات کا تعین کر کے بتائیں کہ کیا یہ سب حالیہ واقعات سلسہ وار ہیں اور کیا ان سب میں کوئی ربط پایا جاتا ہے یا نہیں۔

انٹرپول نے رکن ممالک سے درخواست کی ہے کہ وہ ان تمام فرار ہونے والے قیدیوں کے بارے میں ملنے والی کسی قسم کی معلومات کی تیزی سے زیر کارروائی لائیں۔

انٹرپول نے یہ بھی درخواست کی ہے کہ ان قیدیوں کے بارے میں ملنے والی تمام معلومات کو جلد از جلد انٹرپول جنرل سیکریٹریٹ کے علم میں لائیں تاکہ کسی بھی قسم کے نئے دہشت گردی کے حملے کو روکا جا سکے۔

اسی طرح انٹرپول کے چوبیس گھنٹے کام کرنے والے کمانڈ اینڈ کورڈینیشن سنٹر اور دوسرے خصوصی یونٹس ان جیل سے فرار ہونے والے قیدیوں اور اس طرح کے واقعات سے حاصل شدہ معلومات پر ترجیحی بنیادوں پر کام کر رہے ہیں تاکہ فوری طور پر متعلقہ ممالک کو خبردار کیا جا سکے۔

دنیا میں ماضی قریب میں دہشت گردی کے بڑے واقعات میں سے کئی اگست کے مہینے میں ہوئے جن میں ممبئی حملے، جکارتہ کے حملے اور روس میں ہونے والے حملے شامل ہیں۔

اسی طرح اس سال نیروبی، کینیا اور دارالسلام، تنزانیہ میں امریکی سفارت خانوں پر ہونے والے حملوں کے پندرہ برس بھی مکمل ہو رہے ہیں۔

حالیہ برسوں میں سفارت خانوں پر حملوں میں شدت دیکھنے میں آئی ہے جن میں کئی ممالک میں مختلف ممالک کے سفارت خانوں کو نشانہ بنایا گیا۔

آج صبح افغانستان کے مشرقی شہر جلال آباد میں پولیس کے مطابق بھارتی قونصلیٹ کے قریب خودکش دھماکے میں کم سے کم آٹھ افراد ہلاک اور بائیس زخمی ہوئے۔

اس سے قبل برطانوی دفترِ خارجہ نے یمن کے دارالحکومت صنعا میں اتوار چار اور پیر پانچ اگست کو اپنا سفارت خانہ بند کرنے کا اعلان کیا جس کے بعد فرانس اور جرمنی نے بھی صنعا میں اپنے سفارت خانے کو انہی تاریخوں میں بند کرنے کا اعلان کیا ہے۔

جمعے کے روز امریکی حکومت نے القاعدہ کے حملوں کے خدشے کے پیش نظر عالمی سطح پر سفری وارننگ جاری کرتے ہوئے اپنے شہریوں سے کہا ہے کہ وہ بیرون ملک سفر کے دوران ہوشیار رہیں۔

اس سے پہلے جمعرات کو امریکی حکام نے اعلان کیا تھا کہ آئندہ اتوار کو دنیا کے مختلف حصوں میں متعدد امریکی سفارتخانے لاحق خطرات کے نتیجے میں بند رہیں گے۔

محکمۂ خارجہ کے بیان کے مطابق’موجود معلومات سے معلوم ہوتا ہے کہ القاعدہ اور اس سے منسلک تنظیمیں خطے اور اس کے باہر دہشت گرد حملوں کی منصوبہ بندی میں مصروف ہیں اور ہو سکتا ہے کہ وہ آج سے لے کر اکتیس اگست تک یہ حملے کرنے کی کوشش کریں۔‘

اسی بارے میں