نائن الیون کے 12 سال مکمل ہونے پر تقریبات

امریکہ میں آج نائن الیون کو ہونے والے حملوں کے 12 سال پورے ہونے کی یاد منائی جا رہی ہے۔

امریکی شہروں نیو یارک، واشنگٹن اور پینسلوینیا میں 11 ستمبر 2001 کو ہونے والے واقعات میں تین ہزار افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

نیو یارک میں ہلاک ہونے والوں کے خاندان کے افراد آج کے دن ان حملوں میں ہلاک ہونے والوں کے نام پڑھتے رہے۔

صدر براک اوباما آج امریکی وزارتِ دفاع پینٹاگون کے باہر ایک یادگاری تقریب میں شرکت کریں گے مگر آج کے دن کے لیے کوئی تقاریر نہیں رکھی گئی ہیں۔

ان حملوں کے نتیجے میں افغانستان میں ایک طویل جنگ کا آغاز ہوا اور امریکہ کی خفیہ نگرانی کے پروگرام کو وسعت دی گئی جس پر حالیہ دنوں میں ایک زوردار بحث چھڑ گئی تھی۔

ایک تقریب امریکی ریاست پینسلوینیا کے قریب قصبے شینکس وِل میں منعقد ہو گی جہاں امریکی فضائی کمپنی یونائٹڈ کی پرواز 93 گر کر تباہ ہو گئی تھی جب اس کے مسافروں نے طیارہ اغوا کرنے والوں سے جہاز آزاد کروانے کی کوشش کی۔

پرواز 93 کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ اس کووائٹ ہاؤس یا کیپٹل ہل پر گرانے کا منصوبہ تھا۔

اس طیارے پر 33 مسافروں سمیت عملے کے سات افراد سوار تھے جب یہ طیارہ پٹس برگ سے 75 میل کے فاصلے پر کھیتوں میں گر کر تباہ ہوا۔

کیرن ہِنسن جن کے بھائی مائیکل وٹنسٹین نیو یارک میں ہلاک ہو گئے تھے نے کہا کہ ’جتنے بھی سال گزر جائیں جب بھی سال کا یہ دن آتا ہے وقت تھم جاتا ہے‘۔

کیرن کو ان کے بھائی کی لاش کبھی نہیں ملی۔

یہ یادگاری تقریبات ایسے وقت میں ہو رہی ہیں جب معمار نئے ورلڈ ٹریڈ سنٹر کی عمارت کو مکمل کر رہے ہیں اور ایک میوزیم بھی تعمیر کیا گیا ہے جو ان واقعات کو یاد کرنے اور بیان کرنے کے لیے ہے۔

منگل کو پرواز نمبر 93 کے لیے ایک مرکز کا سنگِ بنیاد رکھا گیا۔

یہ عمارت 2015 کے آخر میں تیار ہو جائے گی اور دو حصوں میں بنائی جائے گی۔ اس کو دیکھنے والے افراد اب تک ان واقعات میں ہلاک ہونے والے افراد کے لیے 35 ہزار پیغامات چھوڑ چکے ہیں۔