لاکھوں پاؤنڈ کی چوری کا منصوبہ ناکام

ایک بینک کے کمپیوٹر پر ریموٹ کنٹرول حاصل کر کے لاکھوں پاؤنڈ چوری کرنے کا منصوبہ بنانے کے الزام میں بارہ افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

اس منصوبے کے لیے ایک جعلی انجینیئر نے لندن کے جنوب مشرق میں سینٹینڈر بینک کی ایک برانچ کے ایک کمپیوٹر میں’ کی بورڈ وڈیو ماؤس‘ نامی آلہ نصب کیا جس سےاس گروہ کو حساس ڈیٹا تک رسائی حاصل ہو سکتی تھی۔

پولیس نے ان افراد کو چوری کی منصوبہ بندی کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔

بینک کے ترجمان کا کہنا تھا کہ اس منصوبے کے ذریعے لاکھوں پاؤنڈ چوری کیے جا سکتے تھے۔

سینٹینڈر بینک کا کہنا تھا کہ ایک شخص جس نے خود کو انجینیئرظاہرکیا، یہ ڈیوائس ان کے ایک کمپیوٹر میں نصب کرنے کی کوشش کی۔

پولیس نے لندن میں ہانسلو، برینٹ، ہیلینگڈن، ویسٹ منسٹر، رچمنڈ اور سلاؤ کے علاقوں میں مختلف جگہوں پر چھاپہ مارے اور کئی چیزوں کو اپنی تحویل میں لے لیا۔

گرفتار ہونے والے افراد کو جمعرات کو حراست میں لیا گیا تھا اور ان کی عمریں تئیس سے پچاس سال کے درمیان ہیں۔

میٹروپولٹن پولیس کا کہنا ہے کہ اس کی ’صحیح وقت پر موثر کارووائی‘ کی وجہ سے ایک بہت بڑا منصوبہ ناکام بنا دیا گیا ہے۔

کے وی ایم (کی بورڈ ویڈیو ماؤس) ایک ایسا آلہ ہے جس کی مدد سے ایک شخص فاصلے سے مختلف کمپیوٹرز کو کنڑول کر سکتا ہے۔

اس آلے کے مدد سے ہیکرز مختلف کمپیوٹرز پر کام کر سکتے ہیں اور وہ یہ بھی دیکھ سکتے ہیں کہ مختلف مانیٹرز پر کیا دیکھا جا رہا ہے۔ یہ دور سے ایک ماؤس اور کی بورڈ کی مدد سے ان کمپیوٹرز کو کنٹرول کر سکتے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ ایسے ہی ایک کے وی ایم آلے کو سینٹینڈر بنک میں نصب کیا گیا مگر اسے کام کرنے سے پہلے ہی پکڑ لیا گیا تھا۔

ڈپٹی انسپکٹر مارک رے منڈ کا کہنا تھا کہ ’یہ ایک سوچا سمجھا منصوبہ تھا جس کی وجہ سے بینک کو بھاری مالی نقصان کا سامنا کرنا پڑ سکتا تھا اور یہ اپنی نوعیت کا انوکھا منصوبہ تھا۔ میں اس صنعت سے وابستہ اُن تمام ساتھیوں کا شکر گزار ہوں جنہوں نے اس تفتیش میں ہماری مدد کی‘۔

دوسری طرف بنک کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ’اس تعاون کی مدد سے سینٹینڈر اس حملے کے خدشے سے آگاہ تھا۔‘

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ’یہ منصوبہ ناکام رہا اور اس میں کبھی بھی مالی نقصان کا خدشہ نہ تھا۔ سینٹینڈر میں کام کرنے والا کوئی شخص اس حملے میں ملوس نہیں تھا۔‘

بینک کے ترجمان کا یہ بھی کہنا تھا کہ سینٹینڈر کو اس حملے کی پہلے سے اطلاع تھی اور فراڈ اینجینیئر کے آلہ لگانے سے تین یا چار مہینے قبل سے ہی وہ پولیس کے ساتھ کام کر رہے تھے۔

جمعے کو سینٹینڈر بنک کی ’سرے کے‘ والی شاخ بند رہی اور کئی صارفین کو اپنے اکاؤنٹ چیک کرنے کے لیے شاخ کے باہر موجود اے ٹی ایم استعمال کرنے کے لیے قطار میں کھڑا ہونا پڑا۔

اسی بارے میں