ہوائی جہاز اڑاتے اڑاتے پائلٹ کو ہارٹ اٹیک

Image caption مقامی میڈیا کے مطابق جہاز میں دو فوجی ڈاکٹر سوار تھے جنہوں نے جہاز اترنے تک پائلٹ کو ابتدائی طبی امداد فراہم کی

امریکہ میں ایک پائلٹ کو دورانِ پرواز دل کا دورہ پڑنے پر مسافر برادر ہوائی جہاز کو ہنگامی لینڈنگ کرنا پڑی۔

یونائٹڈ ائرلائن کے اس جہاز میں 161 مسافر سوار تھے اور یہ ہوسٹن سے سیاٹل جا رہا تھا۔

دورانِ پرواز اس کے پائلٹ کی طبیعت خراب ہو گئی اور جہاز میں سوار مسافر جنہوں نے طبی تربیت حاصل کر رکھی تھی، لینڈنگ سے پہلے پائلٹ کو ابتدائی طبی امداد فراہم کی۔

جہاز کو ہنگامی طور پر اتار لیا گیا اور ہسپتال پہنچانے پر معلوم ہوا کہ پائلٹ کو دل کا جان لیوا دورہ پڑا ہے اور بعد میں 63 سالہ پائلٹ ہینری سکلن کی موت واقع ہو گئی۔

پرواز کے دوران مقامی وقت کے مطابق شام سات بجے کے قریب ہوائی جہاز کے فسٹ پائلٹ افسر نے بؤسی ائرپورٹ کے کنٹرول ٹاور سے رابط کر کے ہنگامی طبی صورتحال کے بارے میں بتاتے ہوئے لینڈنگ کی درخواست کی۔

مقامی میڈیا کے مطابق جہاز میں دو فوجی ڈاکٹر سوار تھے جنہوں نے جہاز اترنے تک پائلٹ کو ابتدائی طبی امداد فراہم کی۔

جہاز اترنے کے بعد آگ بجھانے والے عملے کے اہلکاروں نے پائٹ سکلن کو ہسپتال پہنچایا۔

ہوائی اڈے بؤسی کے ایک ترجمان پیٹی ملر نے امریکی خبر رساں ادارے اے پی کو بتایا کہ بوئنگ 737 کی پرواز پر 161 مسافر سوار تھے۔

’ایسا محسوس ہوتا ہے کہ جو کچھ بھی کر سکتے تھے انہوں نے کیا۔ مسافر اس کے بارے میں تشویش میں مبتلا تھے لیکن پرسکون رہے۔‘

اسی بارے میں