افریقہ کے 55 ارب پتی افراد کی فہرست جاری

Image caption انگولا کے صدر کی بیٹی اور سرمایہ کار ایزابل سانتوس اس فہرست میں شامل واحد انگولن ہیں

افریقی ملک نائیجیریا سے شائع ہونے والے مالیاتی جریدے وینچرز میں کہا گیا ہے کہ براعظم افریقہ میں 55 افراد ایسے ہیں جن کے اثاثوں کی مالیت اربوں ڈالر میں ہے۔

ان میں تین خواتین بھی ہیں جن میں کینیا کے صدر کی والدہ، انگولا کے صدر کی بیٹی اور نائیجیریا میں تیل اور فیشن کی صنعت سے وابستہ خاتون شامل ہیں۔

جریدے کے مطابق افریقہ کے امیر ترین شخص نائیجیریا کے الیکو دنگوتے ہیں جن کے پاس 20 ارب 20 کروڑ ڈالر کے اثاثے ہیں۔

نامہ نگاروں کے مطابق یہ فہرست افریقہ میں امیروں اور غریبوں میں عدم مساوات کے معاملے پر نئی بحث چھیڑ سکتی ہے۔

رواں برس اپریل میں عالمی بینک نے کہا تھا کہ افریقہ میں انتہائی غریب افراد کی تعداد گذشتہ تین دہائیوں میں ساڑھے 20 کروڑ سے بڑھ کر 41 کروڑ 40 لاکھ ہوگئی ہے۔

اسی ماہ کے آغاز میں ایفرو بیرومیٹر نامی تحقیقی گروپ نے اپنی رپورٹ میں یہ بھی کہا تھا کہ براعظم افریقہ میں معاشی ترقی کے ثمرات سے صرف مراعات یافتہ طبقہ ہی لطف اندوز ہو رہا ہے۔

نائیجیریا کے شہر لاگوس میں بی بی سی کے نامہ نگار ٹومی اولادیپو کا کہنا ہے کہ یہ پہلا موقع ہے کہ وینچرز کی جانب سے افریقی امرا کی ایسی کوئی فہرست جاری کی گئی ہے۔

امریکی مالیاتی جریدہ فوربز عموماً دنیا بھر کے امراء کی فہرست جاری کرتا ہے اور اس نے گذشتہ برس اپنی فہرست میں افریقہ سے 16 ارب پتی افراد کو شامل کیا تھا، تاہم وینچرز کی فہرست میں یہ تعداد کہیں زیادہ ہے۔

وینچرز کے مطابق افریقہ کے 55 ارب پتی افراد کے اثاثوں کی کل مالیت 143.8 ارب ڈالر بنتی ہے۔

جریدے کا کہنا ہے کہ ان 55 میں سے 20 کا تعلق نائیجیریا، نو کا جنوبی افریقہ اور آٹھ کا مصر سے ہے۔

فہرست کے مطابق نائیجیریا کی امیر ترین خاتون فلورنشو الاکیجا ہیں جنہوں نے تیل کی صنعت سے 7 ارب 30 کروڑ ڈالر کمائے ہیں۔

اس فہرست میں دو اور اہم نام انگولا کے صدر ہوزے ایڈوارڈو سانتوس کی بڑی بیٹی اور سرمایہ کار ایزابل سانتوس اور کینیا کے صدر اوہورو کینیاتا کی والدہ کا بھی ہے۔

جریدے نے ایلن گرے کو ساڑھے آٹھ ارب ڈالر کے اثاثوں کے ساتھ جنوبی افریقہ کا امیر ترین شخص قرار دیا ہے۔ وینچرز کے مطابق گرے کی دو سرمایہ کاری کرنے والی کمپنیاں مجموعی طور پر 50 ارب ڈالر کے اثاثہ جات کی دیکھ بھال کرتی ہیں۔

سلطنتِ سوازی لینڈ میں جائیداد کی خریدوفروخت اور تعمیرات کے کاروبار سے منسلک نیتھن کرش بھی اس فہرست میں شامل ہیں۔ ان کے اثاثوں کی مالیت تین ارب 60 کروڑ ڈالر بتائی گئی ہے۔

وینچرز کے مدیرِ اعلیٰ اوزو ایوالا نے بی بی سی کو بتایا کہ افریقہ میں 50 ارب پتی افراد کی موجودگی انتہائی محتاط اندازہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’یہاں کا رواج ہے کہ امرا اور غربا میں معاشرتی تفاوت کی وجہ سے آپ اپنی دولت کی نمائش نہیں کرتے۔‘

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ’اگر آپ کے پاس بہت دولت ہے تو آپ کو بہت سے لوگوں کا بوجھ اٹھانا پڑتا ہے اس لیے ہمارے خیال میں لوگ دولت کی نمائش اور اپنے اثاثوں کے بارے میں بات کرنے سے کتراتے ہیں۔‘

اسی بارے میں