مالی میں دو فرانسیسی صحافی اغوا کے بعد ہلاک

Image caption دونوں صحافی کدال میں ایک علیحدگی پسند جماعت کے اہلکار کا انٹرویو کر کے نکلے ہی تھے کہ اغوا ہو گئے

افریقی ملک مالی میں فرانس کے دو صحافیوں کو اغوا کرنے کے بعد ہلاک کر دیا گیا ہے۔

فرانسیسی ریڈیو سٹیشن آر ایف آئی کے لیے کام کرنے والے دونوں صحافیوں کو مالی کے شمالی شہر کدال سے اغوا کیا گیا تھا۔

فرانسیسی صدر فرانسو اولاند نے صحافی کلود ورلون اور گشلین ڈوپنٹ کی ہلاکت کو قابل نفرت حرکت قرار دیا ہے۔

دونوں صحافیوں کو ایک ایسے وقت ہلاک کیا گیا ہے جب چند روز پہلے ہی ہمسایہ ملک نائجر سے چار فرانسیسی شہریوں کی رہائی پر خوشی منائی جا رہی تھی۔

ریڈیو فرانس انٹرنیشنل کے دونوں صحافیوں کو کدال میں علیحدگی پسند گروپ کے مقامی اہلکار کا انٹرویو کر کے واپس جاتے ہوئے اغوا کیا گیا۔

فرانس کی مسلح افواج کے ایک ترجمان کرنل گیلز کے مطابق دونوں صحافیوں کی لاشیں کدال سے مشرق کی جانب دس کلومیٹر کے فاصلے سے ملی ہیں اور اغوا کاروں کے بارے میں معلوم نہیں ہو سکا ہے۔

صحافیوں کے تحفظ کے لیے کام کرنے والے ادارے ’سی پی جے‘ کے مطابق رواں سال اب تک 42 صحافی مارے جا چکے ہیں جبکہ سنہ 1992 سے اب تک ہلاک ہونے والے صحافیوں کی تعداد 1009 ہے۔

یاد رہے کہ فرانس نے مالی میں جنوب کی طرف دارالحکومت بماکو کی جانب باغیوں کی پیش قدمی کو روکنے کے لیے مالی میں رواں سال جنوری میں فوجی مداخلت کی تھی۔

ابھی بھی فرانس کے دو ہزار فوجی مالی میں موجود ہے جبکہ سال کے آخر میں ان کی تعداد ایک ہزار رہ جائیں گے۔

اسی بارے میں