قزاقستان: انتہا پسندی کے خلاف نئی پورٹل

قزاقستان میں حکام نے ملک میں انتہا پسندوں کے بڑھتے ہوئے اثر و رسوخ کا مقابلہ کرنے کے لیے ایک انٹرنیٹ پورٹل کا اجرا کیا ہے۔

اس ویب پورٹل کو ’ای - اسلام‘ کا نام دیا جا رہا ہے۔

سابقہ سوویت یونین کی اس ریاست میں حالیہ برسوں میں مقامی انتہا پسندوں کی جانب سے کئی حملے کیے گئے ہیں۔

قزاقستان ایک مسلم اکثریتی ملک ہے اور وہاں ایک سیکولر حکومت ہے۔ قزاقستان ملک میں آباد مختلف لسانی اور مذہبی گروہوں میں ہم آہنگی کے فروغ پر فخر محسوس کرتا ہے۔

لیکن رواں ماہ بی بی سی کو دیے گئے ایک انٹرویو میں ملک کے وزیر خارجہ ایرلان ایریسوو نے اس بات کو تسلیم کیا کہ بڑھتی ہوئی شدت پسندی اس قوم کے لیے ایک ’ثقافتی دھچکہ‘ ہے۔

اس نئی ای - اسلام پورٹل کا مقصد اس بڑھتی ہوئی انتہا پسندی کا مقابلہ کرنا ہے۔

میڈیا کے سامنے اس پورٹل کو متعارف کرواتے وقت قزاقستان کی مذہبی امور کی ایجنسی کا کہنا تھا کہ اس پورٹل کا مقصد لوگوں کو اسلام اور قزاقستان کی روایات کے بارے میں تعلیم دینا ہے۔

ادارے کے سربراہ مارات عزلخانوف کا کہنا تھا کہ ’روایتی اسلام کی اہم اصولوں اور قزاقستان کے لوگوں کی قدیم ثقافت کے بارے میں بتا کر اس پورٹل کا مقصد ہمارے معاشرے کے روحانی اقدار کو اجاگر اور قدامت پسند فرقوں کے اثر و رسوخ کو کم کرنا ہے۔‘

انہوں نے بتایا کہ دو ہفتے قبل اس ویب سائٹ کے آغاز کے بعد سے 3,000 لوگ اسے پڑھ چکے ہیں۔

اس پورٹل پر لیکچرز کی ویڈیو اور آڈیوز، مختلف موضوعات جیسا کہ نماز اور روزے جیسے موضوعات پر مشتمل ایک ڈائریکٹری اور حکام کے مطابق ’مذہبی سکالرز‘ کی جانب سے لکھے گئے بلاگ بھی موجود ہیں۔

اس سرکاری ادارے نے ایک ٹیلیفون ہاٹ لائن بھی بنائی ہے جس کے ذریعے لوگ مذہبی ماہرین سے مشورے کر سکتے ہیں۔

قزاقستان میں کیے گئے یہ اقدامات خطے میں اس بڑے خدشے کی عکاسی کرتے ہیں جہاں شدت پسند متحرک ہیں اور ان میں سے کچھ افغانستان اور پاکستان میں تربیت حاصل کر رہے ہیں۔

کئی وسطی ایشیائی ممالک میں ان مسلم گروہوں کو بہت شک کی نگاہ سے دیکھا جا رہا ہے جو حکومت کی جانب سے منظور کردہ مسجدوں کے باہر کام کر رہے ہیں۔

سابق سوویت یونین کی ان زیادہ تر ریاستوں میں اسلامی روایات اور ثقافت ہے اور ان پر سیکولر صدور کی حکمرانی ہے جن کی احکامات کو چیلنج کرنے والا کوئی نہیں۔

ایک لمبے عرصے سے ملک کی حکمرانی کرنے والے نور سلطان نذربایوف کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے ایک دن کی تعطیل کی تیاریوں میں اس انٹرنیٹ پورٹل کا اجرا کی خبر نظر انداز ہوگئی ہے۔

اسی بارے میں