کیری کا بھارتی سفارت کار سے سلوک پر افسوس

Image caption واقعے کی وجہ سے دونوں ممالک کے درمیان قریبی اور اہم تعلقات کو نقصان نہ پہنچے: جان کیری

امریکہ کے وزیر خارجہ جان کیری نے بھارت کی قومی سلامتی کے مشیر شیو شنکر مینن سے نیویارک میں بھارتی سفارت کار دیویانی کھوبرا گڑے سے گرفتاری کے بعد ہونے والے سلوک پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

امریکی وزیر خارجہ نے اس کے ساتھ یہ بھی کہا ہے کہ وہ امید کرتے ہیں کہ امریکی میں جو بھی رہے وہ قانون پر عمل کرے۔

بھارت میں ایوان بالا یعنی راجیہ سبھا میں اراکین نے امریکہ میں بھارتی سفارت کار کے ساتھ ہونے والے ’ناروا سلوک‘ کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے امریکہ سے معافی کا مطالبہ کیا ہے۔

بس امریکہ معافی مانگے: بھارت کا مطالبہ

دیویانی پر امریکہ میں ویزا قوانین کے سلسلے میں جعل سازی کے الزامات کا سامنا ہے اور اسی لیے انھیں برہنہ کر کے ان کی جامہ تلاشی لی گئی۔

امریکی وزیر خارجہ جان کیری کی بھارتی قومی سلامتی کے مشیر شیو شنکر مینن سے ٹیلی فون پر بات چیت کے بارے میں امریکی محکمۂ خارجہ کی ترجمان میری ہارف نے بتایا کہ ’دیویانی کھوبراگڑے کی عمر کی دو بیٹیوں کا باپ ہونے کے ناطے کیری گرفتاری کے بعد کے واقعات کے بارے میں بھارت کی طرف سے ظاہر کیے جانے والے جذبات کی قدر کرتے ہیں اور انھوں نے قومی سلامتی کے مشیر مینن کے ساتھ بات چیت کے دوران اپنے افسوس ظاہر کیا اور فکر بھی ظاہر کی کہ اس افسوس ناک واقعے کی وجہ سے دونوں ممالک کے درمیان قریبی اور اہم تعلقات کو نقصان نہ پہنچے۔‘

Image caption بھارت میں امریکہ کے خلاف احتجاجی مظاہرے بھی ہوئے ہیں

امريكی محکمۂ خارجہ کی ترجمان کا کہنا تھا کہ امریکہ کے وزیر خارجہ کی حیثیت سے جان کیری امریکہ کے سفارت کاروں کی حفاظت کے لیے بھی ذمہ دار ہیں اور اس لیے وہ ذاتی طور پر اس معاملے پر بات چیت کرنا چاہتے تھے۔

ترجمان میری ہارف کے مطابق: ’وزیر خارجہ کیری امریکی قانون نافذ کرنے اور متاثرین کی حفاظت کرنے کی اہمیت کو اچھی طرح سمجھتے ہیں اور یہاں رہنے والے تمام اہل کاروں سے امید کرتے ہیں کہ وہ یہاں کے قانون پر عمل کریں۔ اسی طرح ان کے لیے یہ بھی اہمیت رکھتا ہے کہ غیر ملکی سفارت کاروں کو مکمل عزت اور وقار دیا جانا چاہیے، جیسا کہ وہ بیرون ملک امریکی سفارت کاروں کو بھی دیے جانے کی امید کرتے ہیں‘۔

امریکی محکمۂ خارجہ کی ترجمان نے واضح کیا کہ جو الزام بھارتی سفارت دیویانی کھوبراگڑے پر لگائے گئے ہیں ان کے بارے میں کوئی مداخلت نہیں کی جائے گی کیونکہ یہ معاملہ امریکی محکمۂ انصاف کے تحت آتا ہے۔

ترجمان کے مطابق نیویارک میں بھارتی قونصل خانے نے دیویانی کھوبراگڑے کے اقوام متحدہ مشن میں تبادلے کے بارے میں امریکی حکومت کو آگاہ نہیں کیا ہے۔

Image caption كھوبراگڑے پر ویزا میں دھوکہ دہی اور غلط بیان دینے کے الزام میں مقدمہ درج ہوا ہے

اس سے پہلے امریکہ میں بھارتی سفارت کار کی گرفتاری پر بھارت نے شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے بھارتی ہوائی اڈوں پر امریکی سفارت کاروں کو حاصل مراعات ختم کرنے کے علاوہ دہلی میں امریکی قونصل خانے میں کام کرنے والوں کے شناختی کارڈ اور سفارتخانے کے ملازمین کو دی جانے والی تنخواہوں کی تفصیلات بھی طلب کر لی تھیں۔

ادھر امریکہ کے محکمۂ خارجہ کے مطابق بھارتی سفارت کار دیویانی کھوبراگڑے کو مکمل استثنیٰ حاصل نہیں تھا اور جنیوا کنونشن کے تحت انھیں صرف اپنے کام سے متعلق جرم میں گرفتاری سے استثنیٰ حاصل تھا۔

بھارت کے وزیر خارجہ سلمان خورشید نے بدھ کو بھارت کے ایوانِ بالا میں امریکہ میں بھارتی سفارت کار کی گرفتاری پر سوالوں کا جواب دیتے ہوئے کہا تھا کہ ’امریکہ نے ہندوستانی سفارت کار کے ساتھ جو کیا ہے، وہ کسی بھی قیمت پر قابلِ قبول نہیں ہے۔ انھوں نے کہا کہ اس بابت خبر موصول ہوتے ہی حکومت نے مناسب ذرائع سے فوری طور پر ردعمل کا اظہار کیا ہے۔‘

اسی بارے میں