بینکاک: پولیس اور مظاہرین میں تصادم

Image caption مظاہرین کا کہنا ہے کہ ملک میں انتخابات سے قبل سیاسی اصلاحات کی ضرورت ہے

تھائی لینڈ کے دارالحکومت بینکاک میں پولیس نے مظاہرین کو منشتر کرنے کے لیے آنسو گیس کا استعمال کیا ہے۔

یہ مظاہرین تھائی لینڈ میں آئندہ برس فروری کے انتخابات میں شرکت کی غرض سے سیاسی جماعتوں کی رجسٹریشن کو روکنے کے جمع تھے۔

پانچ سو کے قریب مظاہرین نے اس سٹیڈیم پر ہلہ بو لنے کی کوشش کی جہاں انتخابی کمیشن کا دفتر قائم ہے۔

تھائی لینڈ کی وزیرِ اعظم ینگ لک شیناواترا نے ملک میں کئی ہفتوں سے جاری مظاہروں کے بعد انتخابات منعقد کروانے کا اعلان کیا ہے۔

مظاہرین کا کہنا ہے کہ ملک میں انتخابات سے قبل سیاسی اصلاحات کی ضرورت ہے۔

مظاہرین نے جمعرات کو اس سٹیڈیم پر پتھراؤ کیا اور ہلہ بولنے کی کوشش کی جہاں الیکشن کمیشن کا دفتر قائم ہے تاہم پولیس نے آنسو گیس کا استعمال کر کے انھیں منتشر کر دیا۔

تھائی وزیراعظم ینگ لک شیناواترا نے حکومت مخالف مظاہروں کے بعد نو دسمبر کو پالیمان کو تحلیل کرتے ہوئے انتخابات کے انعقاد کا اعلان کیا تھا۔

تھائی لینڈ میں سنہ 2010 کے بعد سے شدید سیاسی بحران جاری ہے۔ ینگ لک سنہ 2011 میں الیکشن جیت کر برسرِاقتدار آئی تھیں لیکن مظاہرین کا کہنا ہے کہ اصل حکومت ان کے بھائی اور معزول کیے گئے سابق وزیراعظم تھاکسین شیناواترا ہی چلا رہے ہیں۔

تھاکسین شیناواترا کی حکومت کو سنہ 2006 میں فوجی بغاوت میں ختم کر دیا گیا تھا اور ان پر بدعنوانی کے الزامات لگے تھے جس کے بعد سے وہ خود ساختہ جلا وطنی کی زندگی گزار رہے ہیں۔

اسی بارے میں