چین: ٹینکوں سے ’بڑے‘ فوجی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption فوجیوں کی جسامت میں اضافے کا مطلب یہ ہو سکتا ہے کہ چین کو بڑے سائز کے فوجی آلات چائییں

خطے میں سیاسی تناؤ کے پس منظر کی وجہ سے ان دنوں چین کے بڑھتے ہوئے دفاعی بجٹ کے بارے میں بہت کچھ کہا جا رہا ہے۔ لیکن ان چینی فوجیوں کا کیا ہوگیا جو خود تیزی سے ’پھیلتے‘ جا رہے ہیں۔

اگر چینی فوجیوں کی جسامت کے بارے میں کیے جانے والے ایک تازہ جائزے کو مد نظر رکھا جائے تو لگتا ہے کہ ملک کی افواج کو اپنے جنگی ساز وسامان کے ناپ بدلنے کے لیے خاصی رقم خرچ کرنا پڑ سکتی ہے۔

پیپلز لبریشن آرمی کے اس سروے کا حوالہ دیتے ہوئے چین کے سرکاری ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ بیس سالہ پہلے کے مقابلے میں اب چینی سپاہیوں کے قد میں اوسطّا دو سینٹی میٹر کا اضافہ ہو چکا ہے اور ان کی کمریں بھی پانچ سینٹی میٹر بڑی ہوگئی ہیں۔

چین کی زمینی افواج کے بیس ہزار فوجیوں نے اس سروے میں حصہ لیا جس میں انسانی جسم کی اٹھائیس مختلف حوالوں سے پیمائش کی گئی۔

اخباری اطلاعات میں کہا جا رہا ہے کہ اوسط جسامت میں اضافے کے بعد خدشہ ہے کہ سپاہی عام طور پر استعمال کیے جانے والے چینی ٹینکوں میں خود کو ’پھنسا‘ ہوا محسوس کر سکتے ہیں۔

بظاہر یہ ٹینک تیس سال پہلے کے سپاہیوں کی جسامت کو مد نظر رکھ کر بنائے جاتے رہے ہیں۔

حالیہ تحقیق کرنے والے گروپ کے سربراہ ڈِنگ سونگٹاؤ کے بقول:’ ہمارے فوجی آلات یقیناّ میدان جنگ کی ضروریات کو نظر میں رکھ بنائے گئے تھے، بالکل اسی طرح جیسے ہم روز مرہ زندگی میں کپڑوں کے لیے پہننے والے کے قد کاٹھ کا ناپ لیتے ہیں۔‘

تازہ ترین سروے کے بعد کچھ ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے اب چین کو فوجیوں کے لیے نئے آلات اور کپڑے متعارف کرانے کی ’فوری ضرورت‘ درپیش آ سکتی ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ تیس برسوں میں چین میں موٹاپے کی شرح میں دوگنا اضافہ ہو چکا ہے۔ اکثر مبصرین بڑھتی ہوئی توندوں کا ذمہ دار ملک میں بڑھتی ہوئی امارت کو قرار دیتے ہیں جس کی وجہ سے یہاں لوگوں کا کھانا پینا بدل چکا ہے۔ بڑھتی ہوئی امارت کے ساتھ ساتھ چینی لوگوں کے رہن سہن میں تبدیلی کو بھی اس کا ذمہ دار قرار دیا جاتا ہے جس میں لوگ چلنے پھرنے کی بجائے ایک جگہ پڑے رہنے کے عادی ہوتے جا رہے ہیں۔

لگتا ہے کہ چینی افواج کو ملک میں آنے والے ان تبدیلیوں کے ساتھ خود کو ہم آہنگ کرنا پڑ سکتا ہے۔ یا تو فوج پست قامت سپاہی بھرتی کرنا شروع کر دے اور یا اپنے ٹینکوں کو بڑا کر لے۔

اسی بارے میں