نیپال: ماؤنٹ ایورسٹ کی سکیورٹی میں اضافہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption حکام کے مطابق ایورسٹ کے بیس کیمپ میں فوج اور پولیس پر مشتمل دفتر رواں برس اپریل میں کھولا جائے گا

نیپال میں حکام کا کہنا ہے حکومت کوہ پیماؤں کے جھگڑوں سے بچنے کے لیے ماؤنٹ ایورسٹ کے بیس کیمپ میں سکیورٹی ٹیم تعنیات کرے گی۔

خیال رہے کہ گذشتہ سال اپریل میں یورپی کوہ پیماؤں اور قلیوں کے ایک گروپ کے درمیان جھگڑا ہوا تھا۔ اگرچہ اس جھگڑے کا تصفیہ ہو گیا تھا تاہم حکام کا کہنا ہے کہ ماؤنٹ ایورسٹ کی ڈھلوانوں میں بھیڑ بڑھتی جا رہی ہے۔

حکام کے مطابق ایورسٹ کے بیس کیمپ میں فوج اور پولیس پر مشتمل دفتر رواں برس اپریل میں کھولا جائے گا۔

نیپال کی وزارتِِ ثقافت کے ایک اہل کار دیپرندرا پاؤدل نے بی بی سی نیپالی سروس کے سریندرا پھوئل کو بتایا کہ یہ سکیورٹی ٹیم نو افراد پر مشتمل ہو گی جس میں نیپال کی فوج، پولیس اور مسلح پولیس کے تین تین اہل کار شامل ہوں گے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ اس سکیورٹی ٹیم کو نیپال کی وزارتِ ثقافت کے اہل کاروں کی بھی مدد حاصل ہو گی۔

نامہ نگاروں کے مطابق گذشتہ برس یورپی کوہ پیماؤں اور قلیوں کے درمیان ہونے والے جھگڑے کی وجہ سے وہاں کوہ پیماؤں کی سلامتی سے متعلق خدشات کا اظہار کیا گیا تھا۔

خبر رساں ایجنسی اے پی کے مطابق حکام کا کہنا ہے کہ نئے دفتر کے قیام سے کوہ پیماؤں کو اپنی شکایات، پہاڑی کی صفائی اور کوہ پیمائی کے قواعد و ضوابط پر عمل درآمد کرنے میں مدد ملے گی۔

اسی بارے میں