یوکرین: آزادی چوک میں سابق وزیرِاعظم کا پرجوش استقبال

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption آپ ہیرو ہیں، آپ یوکرین کے بہترین لوگ ہیں: یُولیا ٹیماشنکو

یوکرین کی سابق وزیرِاعظم یُولیا ٹیماشنکو کا جیل سے رہائی کے بعد دارالحکومت کیئف کے آزادی چوک میں ہزاروں کی تعداد میں حزبِ اختلاف کے حامیوں نے پرجوش استقبال کیا ہے۔

سابق وزیرِاعظم کو کمر کی تکلیف ہوئی ہے جس کی وجہ سے انھوں نے اپنی ویل چیئر پر بیٹھ کر مظاہرین سے خطاب کیا۔

انھوں نے کہا:’آپ ہیرو ہیں، آپ یوکرین کے بہترین لوگ ہیں۔‘ یہ کہہ کر وہ رو پڑی۔

انھوں نے یہ خطاب صدر وکٹر یانوکووچ کا کیئف چھوڑ کر چلے جانے اور پارلیمان کی طرف سے ان کے مواخذے کی منظوری دینے کی بعد کی۔

تاہم یُولیا ٹیماشنکو نے خبردار کیا کہ مظاہرین یہ نہ سوچیں کہ ان کا کام ختم ہوا۔

’جب تک ہم یہ کام ختم نہ کر دیں اور اپنی منزل تک سفر پوار نہ کریں، کسی کو جانے کا حق نہیں ہے، کیونکہ کوئی بھی اس کو پورا نہیں کر سکتا، کوئی دوسرا ملک بھی، کوئی بھی وہ نہیں کر سکتا تھا جو آپ لوگوں نے کیا ہے۔‘

کیئف میں بی بی سی کے ڈیوڈ سٹرن کا کہنا ہے کہ حاضرین میں سے بہت سے افراد نے ان کے تقریر کا جواب دیا لیکن انھیں حزبِ اختلاف کے تمام اراکین کی حمایت حاصل نہیں۔

جیل جانے سے پہلے یُولیا ٹیماشنکو کی شہرت میں کمی آئی تھی، ملک کے اکثر لوگ انھیں نارنجی انقلاب کے بعد کے عدم استحکام کا ذمہ دار ٹھہراتے ہیں اور انھیں بدعنوان اشرفیہ کا حصہ سمجھتے ہیں۔

آزادی چوک میں بی بی سی کے نامہ نگار ٹم ویلکوکس نے کہا کہ جب وہ سٹیج پر آئیں تو درجنوں افراد مایوس ہو کر چلتے ہوئے کہنے لگے کہ وہ ہماری نمائندگی نہیں کرتیں۔

جمعے کو پارلیمان میں ووٹنگ ہوئی جس سے یُولیا ٹیماشنکو کی رہائی کا راستہ ہمار ہوا اور ان کو رہا کیا گیا۔

انھیں اپنے وزاتِ اعظمیٰ کے دور میں کیے گئے اقدامات کی پاداش میں سنہ 2011 میں سات سال جیل کی سزا ہوا تھی۔

اس سے پہلے سنیچر کو یُولیا ٹیماشنکو ملک کے مشرقی علاقے میں واقع شہر خارکیف سے ہوائی جہاز کے ذریعے کیئف پہنچی۔ وہ خاکیف کے ہسپتال میں نظر بند تھیں۔

خبر رساں ادارے انٹرفیکس کے مطابق کیئف کے ایئرپورٹ پر انھوں نے صحافیوں کو بتایا کہ جو لوگ تشدد کے ذمہ دار ہیں ’انھیں ضرور سزا دینی چاہیے۔‘

اسی بارے میں