’روسی فوجی کارروائی نے مذاکرات مشکل بنا دیے ہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اواکس طیارہ اتحادی ممالک کی فضائی حدود میں ہی پرواز کریں گے: نیٹو ترجمان

امریکی حکام کے مطابق امریکہ کے وزیرِ خارجہ جان کیری نے روسی صدر ولادی میر پوتن سے اس وقت تک ملنے سے انکار کیا ہے جب تک روس یوکرین کے بحران سے نمٹنے کے لیے امریکی تجاویز پر عمل نہیں کرتا۔

کرائمیا: ’حرکت کی، تو گولی مار دوں گا‘

یوکرین کا بحران مصنوعی ہے: روسی وزیرِ خارجہ

امریکی وزیرِ خارجہ نے اپنے روسی ہم منصب کو بتایا ہے کہ روس کی جانب سے کرائمیا کے خطے میں مداخلت نے بات چیت کو بہت مشکل بنا دیا ہے۔

امریکی حکام کا کہنا ہے کہ اگر روس سے الحاق کے لیے کرائمیا میں آئندہ اتوار کو مجوزہ ریفرینڈم کروایا گیا تو بات چیت کے لیے موضوعات کم رہ جائیں گے۔

ادھر منگل کے روز روس میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یوکرین کے معزول صدر وکٹر یانوکوچ نے یوکرین کی نئی حکومت کو ’فسطائی بدمعاش‘ قرار دیا ہے اور ان کا کہنا ہے کہ 25 مئی کو جو انتخابات ہونے جا رہے ہیں وہ غیر قانونی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption بحران پر بات چیت کے لیے اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل کا دس روز میں پانچواں اجلاس ہو رہا ہے

اس کے علاوہ یوکرین کے وزیراعظم آرسنی یاتسن یوک نے کیوف میں ارکانِ پارلیمان سے کہا ہے کہ کرئمیا کے حکام ایک ’منظم گینگ‘ ہیں اور انہیں روسی حمایت حاصل ہے۔ انہوں نے روس سے کہا ہے کہ مسئلے کو سفارتی طریقے سے حل کیا جائے۔

اس سے پہلے نیٹو نے اعلان کیا تھا کہ یوکرین کی سرحدوں کی نگرانی کے لیے اواکس طیاروں کو رومانیہ اور پولینڈ میں تعینات گیا ہے تاکہ اتحادی ممالک بدلتی صورتحال سے بروقت آگاہ ہو سکیں۔

نیٹو کے اہلکار کے مطابق نگرانی کے لیے پروازیں صرف اتحادی ممالک کے علاقوں پر کی جائیں گی۔

ادھر بحران پر بات چیت کے لیے اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل کا دس روز میں پانچواں اجلاس ہو رہا ہے۔ دریں اثنا لندن میں مختلف ممالک کے وزرا یوکرین میں روسی مداخلت کے پیشِ نظر روس کے خلاف ممکنہ پابندیوں پر غور کرنے کے لیے جمع ہو رہے ہیں۔

یوکرین میں یورپ کے حامیوں کی طرف سے روسی کے حامی صدر یانوکووچ کو اقتدار سے علیحدہ کرنے کے بعد روس نے یوکرین کے روسی آبادی والے جزیرہ نما کرائمیا میں اپنے فوجی بھیجوا دیے ہیں اور وہاں اپنی پوزیشن کو مضبوط بنا رہا ہے۔

کرائمیا کی اسمبلی پہلے ہی روس کے ساتھ الحاق کی منظوری دے چکی ہے۔ اس کے علاوہ کرائمیا کے عوام چند روز میں ایک ریفرنڈم میں حصہ لینے والے ہیں جس میں ان سے پوچھا جائےگا کہ کیا وہ روس کے ساتھ الحاق چاہتے ہیں۔

امریکہ اور مغربی ممالک روس پر زور دے رہے ہیں کہ روس یوکرین کے علاقے سے نکل جائے۔

نیٹو کے ایک ترجمان نے کہا کہ نیٹو طیاروں کو پولینڈ اور رومانیہ میں تعینات کرنے کا فیصلہ سوموار کو ہوا۔

ترجمان نے واضح کیا کہ اواکس طیاروں کی پروازیں اتحادی ممالک کی خلائی حدود میں ہوں گی۔

پیر کے روز کرائمیا میں موجود مسلح افراد، جن کےبارے میں کہا جا رہا ہے کہ وہ روسی فوجی ہیں ، انھوں نے کرائمیا کے ایک ہسپتال پر قبضہ کر لیا ہے۔

ادھر روس کے حامی فوجیوں نے یوکرین کے فوجیوں کو کرائمیا میں روک رکھا ہے۔

روس نے سرکاری طور ان الزامات کی تردید کی ہے کہ اس کے فوجی یوکرین کے فوجیوں کو کرائمیا میں نقل و حرکت سے روک رہے ہیں۔

یوکرین کی نئی حکومت، یورپی یونین اور امریکہ نے روس پر الزام لگایا ہے کہ اس نے یوکرین میں دراندازی کر کے عالمی قوانین کی خلاف ورزی کی ہے۔

گذشتہ ہفتے یورپی یونین نے کہا تھا کہ وہ روس کے ساتھ اپنے تعاون کے معاہدوں کا ازسر نو جائزہ لے رہا ہے۔

اسی بارے میں