دس چیزیں جن سے ہم گذشتہ ہفتے لاعلم تھے

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption زمین پرگری خوراک اٹھانے میں ’پانچ سیکنڈ کا قانون‘ درحقیقت کارگر ہے

1: ہاتھی آواز سن کر مرد اور عورت اور مختلف نسلوں میں تمیز کر سکتے ہیں۔

مزید معلومات کے لیے کلک کریں

2:جان لینن سے اکثر منسوب کیا جانے والا فقرہ ’رنگو دنیا کا بہترین ڈرمر نہیں۔ وہ تو بیٹلز کا بھی بہترین ڈرمر نہیں ہے‘ درحقیقت برطانوی مزاحیہ اداکار جیسپر کیرٹ نے 1983 میں ادا کیا تھا۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیں (دی ٹائمز)

3: تنہائی کا شکار مور مورنیوں کو متوجہ کرنے کے لیے جنسی عمل سے جڑی آوازیں نکالتے ہیں۔

مزید معلومات کے لیے کلک کریں

4: برطانوی سائیکلیسٹ سر بریڈلی وگنز بی بی سی ریڈیو فور کے ڈرامے آرچرز کے مداح ہیں۔

مزید معلومات کے لیے کلک کریں

5: ایک زمانے میں آرکٹک کے علاقے میں ’پگمی ٹرائنوسار‘ پائے جاتے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ R DAKIN
Image caption مور مورنیوں کو متوجہ کرنے کے لیے جنسی عمل سے جڑی آوازیں نکالتے ہیں

مزید معلومات کے لیے پڑھیں (گارڈین)

6: تیرہویں صدی عیسوی میں چنگیز خان کے ایک وسیع، مضبوط اور طاقتور منگول سلطنت قائم کرنے میں موافق موسمی حالات کا بڑا عمل دخل تھا جو ایک ہزار سال سے زیادہ عرصے کا سب سے زیادہ معتدل اور موافق موسم تھا۔

مزید معلومات کے لیے کلک کریں

7: زمین پرگری خوراک اٹھانے میں ’پانچ سیکنڈ کا قانون‘ درحقیقت کارگر ہے یعنی اگر پانچ سیکنڈ کے اندر اسے اٹھا لیا جائے تو اس کے آلودہ ہونے کے امکانات کم ہوتے ہیں۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیں (دی ٹائمز)

8: اگر کسی بلی کے بچے کا تین سے آٹھ ہفتے کی عمر کے دوران انسان سے دوستانہ انداز میں سامنا نہ ہو تو اس کے جنگلی بننے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔

مزید معلومات کے لیے کلک کریں

9: انسان کسی فرد کی آواز میں ’ہیلو‘ سن کر اس کی شخصیت کے بارے میں ویسا ہی اندازہ لگاتے ہیں جیسا کہ اس سے ملاقات پر۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیں (نیو سائنٹسٹ)

10: جانور بجلی کی تاروں سے اس لیے دور رہتے ہیں کیونکہ انھیں ان تاروں سے خارج ہوتی وہ الٹراوائلٹ شعائیں دکھائی دیتی ہیں جو انسان نہیں دیکھ سکتے۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیں (روزنامہ ٹیلی گراف)

اسی بارے میں