مشہور شخصیات جو موٹاپے پر خوش ہیں

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اکثر اداکار اور مشہور شخصیات اپنے موٹاپے کو تسلیم کرتے ہیں جبکہ بعض اس سے فائدہ بھی اٹھاتے ہیں

بی بی سی فوڈ کے پروگرام ’ٹو فیٹ لیڈیز‘ یعنی دو موٹی عورتیں کی شریک میزبان کلیریسا ڈکسن رائٹ فوت ہوگئی ہیں اور وہ ان چند مشہور افراد میں سے ایک تھیں جو خوشی سے اس بات کو تسلیم کرتی تھیں کہ وہ ’موٹی‘ ہیں۔

ڈکسن رائٹ اور ان کے پروگرام کی شریک میزبان جینیفر پیٹرسن اس دور کی بہت ہی نامور شخصیات میں سے ایک تھیں جس دور میں جسم کے سائز پر بہت توجہ دی جاتی تھی اور وہ اپنے آپ کو موٹا کہنے میں شرمندگی محسوس نہیں کرتی تھیں۔

انہوں نے برطانوی اخبار گارڈین کو 2009 میں بتایا تھا کہ ’اگر آپ موٹے ہیں تو موٹے ہیں مجھے جدید دور کی اس سیاستی درستگی سے نفرت ہے کہ آپ چیزوں کو ان کے اصل ناموں سے نہیں پکارتے۔‘

تاہم موسیقار فیٹ ڈومینو جن کی 1950 میں پہلی ریکارڈنگ ’دی فیٹ مین‘ تھی، کے بعد سے ایسا کوئی نہ کوئی شخص رہا ہے جس نے اپنے سٹیج کے نام کو اس طرح سے رکھا ہے یا دوسروں نے اسی طرز پر کھیلا ہے۔

کامیڈین اپنے آپ کو بہتر طریقے سے پیش کرتے ہیں جیسا کہ جو برینڈ نے، جو اپنے آپ کو ’ایک درمیانی عمر کا حقوقِ نسواں کا موٹا علمبردار‘ کہلاتے تھے اور لمبے عرصے تک تک موٹاپے کے حوالے اپنے کامیڈی شوز میں دیتے رہے تھے، گارڈین اخبار کو اپنے ایک انٹرویو میں بتایا کہ ’یہ ایک ایسی چیز ہے جسے میں نہیں روک سکتا اور لمبے عرصے سے کر رہا ہوں۔‘

اب وزن کا حوالہ کامیڈین کے ساتھ بہت مختلف ہے اور ایسا نہیں کہ ان پر وزن گھٹانے کے لیے دباؤ ہوتا ہے جیسا کہ ڈون فرینچ ہیں جن کا وزن کئی بار گھٹا اور بڑھا ہے اور ان پر الزام بھی لگتا رہا ہے کہ انہوں نے ’موٹے افراد کے کلب سے غداری‘ کی ہے۔

اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ موٹاپا کیسے آپ کی شناخت کا حصہ بن جاتا ہے۔

ڈون فرینچ نے برطانوی اخبار ڈیلی میل کو بتایا کہ ’میں بالکل خوش ہوں جیسا میں دکھائی دیتی ہوں بلکہ ہمیشہ خوش رہی ہوں۔ میں ہمیشہ ایک موٹی لڑکی رہی ہوں اور میں اس سے خوش ہوں۔‘

ہالی وڈ پر اکثر یہ الزام لگتا ہے کہ وہ زیرو سائز اور جسم سے متعلقہ معاملات کو بہت بڑھا چڑھا کر پیش کرتا ہے۔

اس کے علاوہ وزن کو کئی لوگ اپنے فائدے کے لیے استعمال کرتے ہیں جیسا کہ اداکار جیک بلیک نے 2008 میں اپنی فلم ٹروپک تھنڈر کی تشہیر کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’بہت سے موٹے لوگ مجھے موٹاپے کے پہاڑ سے نیچے گرانے کے چکر میں ہیں اور وہ سب کوشش کر رہے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ میں موٹا ترین شحص بننا چاہتے ہیں مگر میرا کہنا ہے کہ نہیں میں سب سے موٹا شخص ہوں اور میں تم موٹے لوگوں کو ہرا دوں گا۔‘

کرسٹی ایلی نے اپنی موٹاپے سے جنگ کو ایک مزاحیہ ڈرامے کی شکل دی۔

اس کے علاوہ مشہور اداکار جیک نکلسن نے ایک بار کہا تھا کہ ’اپنے دھوپ کے چشمے کے ساتھ میں جیک نکلسن لگتا ہوں مگر اس کے بغیر میں ایک 60 سالہ موٹا ہوں۔‘