دبئی میں پالتو جانوروں کے لیے ٹیکسی سروس

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption دبئی میں پالتو جانور رکھنے کے رجحان میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے

دبئی میں پالتو جانوروں کی لیے شروع کی جانے والی ٹیکسی سروس مقبول ہو رہی ہے۔

دبئی میں پبلک ٹرانسپورٹ میں پالتو جانور کے ساتھ سفر کرنے پر پابندی ہے۔

گلف نیوز کے مطابق دبئی میں مقیم ایک برطانوی شہری نے گذشتہ سال اکتوبر میں اس وقت یہ سروس شروع کی جب ان کے ایک دوست نے اپنے پالتو کتے کو جانوروں کے ڈے کیئر مرکز پہنچانے میں مدد کی درخواست کی۔

پالتو جانوروں پر سالانہ 50 ارب ڈالر خرچ

آرتھر اوبن کے مطابق گذشتہ کئی ماہ کے دوران انھوں نے ایک سو سے زائد پالتو جانوروں کو ٹیکسی کے ذریعے ایک جگہ سے دوسری جگہ پہنچایا۔

انھوں نے کہا کہ ان میں زیادہ تر کو ڈے کیئر کے مراکز اور جانوروں کے ڈاکٹروں کے کلینک پہنچایا۔

آرتھر اوبن کے مطابق وہ ایئرپورٹ سے بھی پالتو جانوروں کو گھروں میں پہنچاتے ہیں کیونکہ وہاں عام ٹیکسی ڈرائیور پالتو جانوروں کو گاڑی میں بیٹھانے سے انکار کر دیتے ہیں۔

اسلامی قوانین کے مطابق کتے کو ناپاک سمجھا جاتا ہے، لیکن دبئی میں پالتو کتے رکھنے کے رجحان میں اضافہ ہو رہا ہے۔

حکام نے حال ہی میں پالتو جانوروں کی غیرقانونی تجارت کو روکنے کے لیے ایک خصوصی مارکیٹ قائم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

اس مارکیٹ میں صرف وہ کتے، بلیاں اور پرندے دستیاب ہوں گے جنھیں پالنے کی اجازت ہو گی۔

اسی بارے میں