طیارے میں ذاتی اپارٹمنٹ کی سہولت

تصویر کے کاپی رائٹ Etihad Airways
Image caption اتحاد ایئرویز کے ایئربس اے 380 کے کیبن میں پیش کیا جانے والا ڈبل بیڈ جو ایک تین کمرے کے اپارٹمنٹ میں موجود ہے۔

تصور کریں کہ آپ ایک طیارے پر اپنے اپارٹنمٹ بھی لے جا سکیں یا آپ کا اپنا ذاتی طیارہ نہ ہو مگر آپ ایک پرائیویٹ جیٹ کی سہولیات ایک عام ایئر لائن کے طیارے میں حاصل کر سکیں؟

متحدہ عرب امارات کی قومی فضائی کمپنی اتحاد ایئرویز نے دنیا میں پہلی بار اپنے نئے اے 380 ایئر بس میں ایک جدت کی ہے اور طیاروں میں ایسے اپارٹمنٹ متعارف کر رہی ہے جو تین کمروں پر مشتمل ہوں گے۔

یہ ’ریزیڈنس‘ فضا میں اڑتا ہوا آپ کا ذاتی اپارٹمنٹ ہوگا جو ایک ڈبل بیڈ روم، ایک شاور روم اور ایک لیونگ روم مشتمل ہوگا اور فائیو سٹار ہوٹل کے معیار کا ہو گا۔

اور تو اور اس ’ریزیڈنس‘ کے رہائشی کو ذاتی بٹلر دستیاب ہوگا جس کی تربیت لندن کے مشہور سیوئے ہوٹل کی اکیڈمی میں کی جائے گی اور باورچی خصوصی مینو تیار کرکے ان کی تواضع کے انتظامات کرے گا۔

ایئربس کے اے 380 طیارے کے سروس میں آنے کے بعد سے ہر ایئر لائن اس میں جدت اور تنوع کے ساتھ ساتھ آسائش پیش کرنے کی کوشش کرتی رہی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Etihad Airways
Image caption طیارے کے فرسٹ کلاس اور بزنس کلاس کے مسافروں کے لیے اوپری منزل پر ہی لاؤنج بھی موجود ہے جہاں آپ بیٹھ کر ٹی وی دیکھ سکتے ہیں یا اپنے دوستوں سے گفتگو کر سکتے ہیں۔

جہاں دبئی کی فضائی کمپنی ایمرٹس نے اپنے فرسٹ کلاس کیبن میں شاور یعنی غسل خانے کی سہولت پیش کی ہے وہیں اس طیارے کو سب سے پہلے استعمال کرنے والی فضائی کمپنی سنگاپور ایئر ویز نے اپنے طیارے پر فرسٹ کلاس سوئیٹ پیش کیا۔

سنگاپور ایئر ویز کا سوئیٹ ایک چھوٹا کمرہ ہے جس میں درمیان کے دونوں سویٹس کی دیوار ہٹا کر انہیں ایک ڈبل بیڈ روم بنایا جا سکتا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Etihad Airways
Image caption فرسٹ ریزیڈنس میں موجود لیونگ روم 32 انچ ایل سی ڈی ٹی وی کے ساتھ پیش کیا گیا ہے۔

تاہم اتحاد ایئرویز اس لگژری کو اس نئے بزنس سٹوڈیو کی شکل میں ایک نئی بلندی پر لے جانےکی کوشش کر رہی ہے جسے یہ اپنے نئے اے 380 اور بوئنگ 787 طیاروں پر پیش کریں گے۔

یہ 125 مربع فٹ پر محیط اپارٹمنٹ اے 380 کے اوپر والی منزل پر موجود ہو گا اور اس کے لیونگ روم کی سیٹوں پر وہی چمڑا استعمال کیا جائے گا جو فیراری کی کار کی سیٹوں پر استعمال کیا جاتا ہے جس کے ساتھ اس کمرے میں 32 انچ ایل سی ڈی ٹی وی بھی دستیاب ہو گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Etihad Airways
Image caption اسی تین کمرے کے اپارٹمنٹ میں یہ غسل خانہ دستیاب ہے جس میں شاور کی سہولت بھی ہے۔

ڈبل بیڈ روم کمرے میں بھی 27 انچ ایل سی ڈی سکرین دستیاب ہو گی جس پر آپ لائیو ٹی وی دیکھ سکیں گے اور اس کے ساتھ موبائل انٹرنیٹ اور براڈ بینڈ کی سہولت بھی ہو گی جبکہ پورے ریزیڈنس میں وائی فائی کی سہولت موجود ہو گی۔

اتحاد ایئر ویز کے چیف کمرشل آفیسر پیٹر بومگارٹنر نے بتایا کہ ’ریزیڈنس اتحاد کو باقی انڈسٹری سے جدا کرتی ہے اور ہمیں موقع فراہم کرتی ہے کہ ہم اپنے وی آئی پی مسافروں کے لیے ان کے انفرادی مزاج کے مطابق سہولیات فراہم کر سکیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Etihad Airways
Image caption انہیں طیاروں میں نئی بزنس سٹوڈیو کی پیشکش بھی ہے جو ایک چھوٹا کمرہ ہے جس میں آپ کی نشست کے علاوہ بیڈ بھی ہے۔

اس کے علاوہ ان دونوں طیاروں پر بزنس سٹوڈیوز بزنس کلاس کے مسافروں کے لیے دستیاب ہوں گے۔ ایئر بس اے 380 کی اوپری منزل پر 70 بزنس سوئٹس جبکہ بوئنگ 787 پر 28 بزنس سٹوڈیوز دستیاب ہوں گے۔

اگر آپ دیکھنا چاہتے ہیں کہ یہ سب کچھ حقیقت میں کیسا لگے گا تو اس لنک پر کلک کرکے ویڈیو دیکھ سکتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Etihad Airways
Image caption اس فرسٹ ریزیڈنس میں سفر کرنے کے بعد آپ نہا دھو کر اپنا سفر ختم کر سکتے ہیں اور میک اپ کو آخری ٹچ دینے کی سہولت بھی اسی میں موجود ہے۔

عالمی معیشت میں مندی کے پسِ منظر میں جس کا براہِ راست اثر ہوابازی پر بھی پڑا اور کئی فضائی کپمنیاں دیوالیہ ہوئیں اور کئی کا نام و نشان مٹ گیا مگر اس نوعیت کی پیشکش سے کیا یہ اشارہ ملتا ہے کہ وقت بدل رہا ہے؟

دوسری جانب اس سب کے باوجود مشرقِ وسطیٰ خصوصاً خلیج فارس کی چھوٹے ممالک کی فضائی کمپنیاں ایمرٹس، قطر ایئرویز، اتحاد، گلف اور اومان ایئر حکومتی سرپرستی میں اس رجحان کے برعکس ترقی کرتی رہیں۔

تاہم اس ساری ترقی اور چمک دمک کے باوجود اتحاد ایئر ویز ابھی تک منافع بخش نہیں ہے اور سوال پیدا ہوتا ہے کہ لگژری مارکیٹ میں ایک پرتعیش پیشکش سے کیا اس کمپنی کے دن پھر سکیں گے؟

اسی بارے میں