برازیل: پیلےکے بیٹے کو 33 سال کی سزا

Image caption برازیل کے میڈیا کا ایڈینیو سے رابطہ نہیں ہو رہا ہے، تاہم بعض اطلاعات کے مطابق وہ اس فیصلے کے خلاف اپیل کریں گے

برازیل کے مشہور فٹ بالر پیلے کے بیٹے کو منشیات کے کاروبار سے کمائی گئی رقم کی منی لانڈرنگ کرنے پر 33 سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

پیلے کے بیٹے ایڈینیو بھی فٹ بال کے کھلاڑی رہ چکے ہیں اور وہ 90 کی دہائی میں اپنے والد کے کلب سانتوس میں گول کیپر تھے۔

ایڈینیو کو پہلی بار 2005 میں گرفتار کیا گیا تھا اور وہ پہلے بھی منشیات کے حوالے سے سزا کاٹ چکے ہیں۔

وہ اس بات کا اعتراف کر چکے ہیں کہ وہ منشیات کے عادی ہیں تاہم اس کا کاروبار کرنے کی تردید کرتے ہیں۔

برازیل کے میڈیا کا ایڈینیو سے رابطہ نہیں ہو رہا ہے، تاہم بعض اطلاعات کے مطابق وہ اس فیصلے کے خلاف اپیل کریں گے۔

پیلے نے برازیل کی جانب سے کھیلتے ہوئے 1958، 1962 اور 1970 میں اپنی ٹیم کو ورلڈ کپ جتوانے میں اہم کردار ادا کیا۔

پیلے نے 1974 میں ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا تھا لیکن ایک سال بعد ہی وہ نیویارک کے فٹ بال کلب کازموس کی جانب سے کھیلنے پر رضا مند ہو گئے تھے۔

ایڈینیو پیلے کی پہلی شادی سے تیسرا بیٹا ہے۔ پیلے جب کازموس کی جانب سے کھیلنے کے لیے نیویارک منتقل ہوئے تو ایڈینیو کی عمر پانچ سال تھی۔

برازیل واپسی پر ایڈینیو نے سانتوس کی جانب سے بطور گول کیپر کھیلنے کا ارادہ کیا تو پیلے ان کے اس فیصلے سے خاصے حیران ہوئے۔

ایڈینیو کی حراست اور منشیات فروشوں کے ساتھ مبینہ روابط پر لوگ حیران ہیں۔

اسی بارے میں