امریکی یونیورسٹی میں فائرنگ سے ایک شخص ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سیاٹل پیسیفک ایک نجی عیسائی یونیورسٹی ہے جس میں تقریباً چار ہزار طلبہ زیرِ تعلیم ہیں

امریکہ کی ریاست واشنگٹن کے شہر سیاٹل میں سیاٹل پیسیفک یونیورسٹی کے کیمپس میں ہونے والی فائرنگ کے نتیجے میں ایک شخص ہلاک اور تین زخمی ہو گئے ہیں۔

ہسپتال کے حکام کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے شخص کی عمر 20 کی دہائی میں ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ایک 20 سالہ زخمی خاتون کی حالت بھی نازک ہے۔

مقامی پولیس حکام کا کہنا ہے کہ فائرنگ کے اس واقعے کے سلسلے میں ایک مشتبہ شخص کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

اس مشتبہ مسلح شخص سے ایک طالب علم نے اسلحہ چھین لیا جبکہ دیگر طلبہ نے اسے پولیس کی آمد تک قابو میں رکھا۔

سیاٹل کے میئر ایڈ مرے نے ایک بیان میں شہر میں ماضی میں ہونے والے فائرنگ کے واقعے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ’بندوق سے ہونے والے تشدد نے ایک بار پھر سیاٹل کا رخ کیا ہے۔ بندوق کے ذریعے ہونے والے تشدد کی وبا نے اس قوم کا جینا حرام کر دیا ہے۔‘

ہاربر ویو میڈیکل سینٹر کا کہنا ہے کہ دیگر دو زخمی افراد کی حالت ٹھیک ہے۔

ابھی تک مشتبہ شخص کے بارے میں کوئی تفصیل جاری نہیں کی گئی جبکہ فائرنگ کے واقعے کی بھی کوئی تفصیلات سامنے نہیں آئیں۔

سیاٹل پیسیفک ایک نجی عیسائی یونیورسٹی ہے جس میں تقریباً چار ہزار طلبہ زیرِ تعلیم ہیں۔

سیاٹل کے نزدیک گذشتہ سال اپریل میں ہونے والے فائرنگ کے ایک واقعے میں پانچ افراد ہلاک ہوئے تھے۔ فائرنگ کا یہ واقعہ ایک اپارٹمنٹ کمپلکس میں پیش آیا تھا۔

خیال رہے کہ امریکہ میں حالیوں سالوں میں تعلیمی اداروں یا ان کے قریب فائرنگ کے کئی واقعات ہوئے ہیں۔

اسی بارے میں