انڈیا: کم جہیز دینے پر 3 سال سے قید خاتون کو پولیس نے بچایا

Image caption گنگا دیوی

بھارت کی ریاست بہار میں پولیس نے تین برس سے سسرال والوں کی قید بھگتنے والی والی ایک خاتون کو بازیاب کرا لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بہار میں گنگا دیوی نامی ایک خاتون کو ان کے سسرال والوں نے جہیز نہ لانے کی پاداش میں تین سال تک قید رکھا اور اس دوران انھیں تشدد کا نشانہ بھی بنایا گیا۔

پچیس سالہ اس خاتون کو ان کے اہل خانہ ک شکایت کرنے پر پولیس نے سسرال والوں کی قید سے بازیاب کرایا۔

گنگا دیوی کو بچانے والے پولیس افسر نے بی بی سی ہندی کو بتایا کہ جب وہ ان کو ملیں تو ان کے کپڑے پھٹے ہوئے تھے اور وہ بہت ڈری ہوئی اور خوف زدہ تھیں۔

گنگا دیوی کو اپنی تین سالہ بیٹی سے ملنے کی اجازت بھی نہیں دی گئی تھی۔

جہیز سے منسلک جرائم بھارت میں ایک سنگین مسئلہ ہے جہاں ہر سال 8,000 سے زیادہ خواتین اسی سماجی برائی کی وجہ سے قتل کر دی جاتی ہیں۔

جہیز دینا یا قبول کرنا جنوبی ایشیائی کی صدیوں پرانی روایت ہے جہاں دلہن کے والدین دولہے کے خاندان کو نقد رقم، کپڑے اور زیورات تحفے میں دیتے ہیں۔

جہیز کی روایت کو سنہ 1961 میں بھارت میں غیر قانونی قرار دے دیا گیا تھا لیکن اس کے باوجود یہ اب بھی بھارتی معاشرے میں عام ہے۔

سماجی مسائل پر کام کرنے والی تنظیموں کے کارکنوں کا کہنا ہے کہ جہیز کی وجہ سے نچلے طبقعوں کی خواتین کو تشدد اور یہاں تک کہ بعض اوقات اپنی جان سے بھی ہاتھ دھونا پڑتے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ گنگا دیوی کو بہار کی مشرقی ریاست ضلع دربھنگہ میں رکھا ہوا تھا۔

ان کو تب بچایا گیا جب ان کے والد شیام سندر سنگھ نے پولیس کو شکایت کی کہ ان کو گزشتہ تین سال سے اپنی بیٹی سے نہیں ملنے دیا گیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ گنگا دیوی کو اپنے والد کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

یہ اب تک واضح نہیں ہوا کے ان کو بچانے میں اتنی دیر کیوں لگی۔

گنگا دیوی کی شادی 2010 میں ہوئی تھی اور ان کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ ان کے ہاں بیٹی کی پیدائش کے بعد انھیں جسمانی تشدد کا نشانہ بھی بنایا جاتا رہا۔

بھارتی ذرائع ابلاغ میں شائع ہونے والی خبروں کے مطابق گنگا دیوی کو ایک اندھیرے اور گندے باتھ روم میں قید رکھا گیا اور خوراک بھی بہت کم دی جاتی رہی۔

ریسکیو آپریشن کرنے والی پولیس افسر سیما کماری نے اس بات کی تصدیق نہیں کی کہ گنگا دیوی کو باتھ روم میں قید رکھا گیا۔

پریس ٹرسٹ آف انڈیا نے سیما کماری کو کہتے ہوئے سنا، ’جیسے ہی ان کو باہر نکالا گیا تو انھوں نے اپنی بیٹی سے ملنے کا کہا، اور جب بچی نے ان کو نہیں پہچانا تو وہ دھاڑیں مار مار کے رونے لگیں۔‘

رپورٹ کے مطابق، گنگا دیوی کے شوہر اور ان کے سسرال والوں کے خلاف پولیس نے شکایت درج کرلی ہے۔ ان کو حراست میں لے لیا گیا لیکن کچھ دیر بعد ضمانت پر رہا کر دیا گیا۔