پولیس نے والدین کو بیٹے کی موت کی غلط خبر دے دی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption جسٹن پریسٹ نے کہا کہ میری آنکھوں میں ابھی بھی نیند کا خمار تھا کہ اچانک اپنے اہل خانہ کو دروازے پر دیکھ کر حیران رہ گیا

امریکی ریاست الاسکا کے ایک چھوٹے شہر میں پولیس نے ایک جوڑے کو غلطی سے یہ خبر دے دی کہ ان کا بیٹا کار حادثے میں ہلاک ہو گیا ہے۔

اس غلط خبر کے نتیجے میں تھوڑی دیر بعد والدین کا اپنے بیٹے سے غیر معمولی ملن ہوا۔

پامر میں جمعرات کو مقامی وقت کے مطابق صبح تین بجے پولیس نے کیرن اور جے پریسٹ کو بتایا کہ ان کا 29 سالہ بیٹا جسٹن کار کے حادثے میں ہلاک ہوگيا ہے۔

غم و اندوہ میں ڈوبے والدین اس خبر کے بعد جسٹن پریسٹ کی گرل فرینڈ کے گھر گئے تاکہ اسے اس سانحے کی خبر دیں لیکن وہاں ان کے بیٹے نے ان کے لیے گھر کا دروازہ کھولا۔

دراصل اسی نام کا دوسرا شخص کار حادثے میں ہلاک ہوا تھا جس کا یوم پیدائش مختلف تھا۔ پولیس نے اس غلطی کے لیے معافی مانگی ہے۔

الاسکا ڈسپیچ نیوز کے مطابق اس سے قبل یہ خبر سننے کے بعد جے پریسٹ نے دور رہنے والے اپنے رشتے داروں کو فون کر کے یہ پرملال خبر دی اور پھر وہ اینکریج گئے تاکہ اپنے دوسرے بیٹوں کو جسٹن کی موت کی اطلاع دے سکیں۔

اس کے بعد وہ دونوں جسٹن کی گرل فرینڈ کو مطلع کرنے کے لیے نکل پڑے۔

جسٹن پریسٹ نے کہا کہ ’صبح تقریباً ساڑھے پانچ بجے جب میں اپنے کتے کے ساتھ چہل قدمی کے لیے نکلنے کی تیاری کر رہا تھا تو میں نے دروازے پر دستک سنی۔ ابھی بھی نیند کا خمار آنکھوں میں تھا کہ اچانک اپنے اہل خانہ کو دروازے پر دیکھ کر حیران رہ گیا۔‘

انھوں نے بتایا کہ ’سب خوشی سے جھوم اٹھے اور حضرت عیسیٰ کی حمد و ثنا کرنے لگے، ایک دوسرے سے خوشی سے چھلکتے آنسو کے ساتھ گلے ملنے لگے۔‘

مسز پریسٹ نے خبررساں ادارے اے پی کو بتایا: ’دروازہ کھلا تو سامنے جسٹن تھا۔ میں نے نہیں دیکھا لیکن جے (جسٹن کے والد) سسکنے لگا۔ میری سمجھ میں کچھ نہیں آیا۔۔۔ میں سوچ رہی تھی کہ کہیں میں خواب تو نہیں دیکھ رہی۔ جسٹن ان سب باتوں سے بےخبر تھا۔‘

اسی بارے میں