’میری محبوبہ کو مت چھونا‘

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption یہ ہلکی پھلی گفتگو ایک ٹی وی چینل کے کیمرے پر محفوظ ہو رہی تھی

امریکہ کے صدر براک اوباما پیر کو شکاگو میں وسط مدتي اتخابات میں ووٹ ڈال رہے تھے جب ان کو قریب سے گزرنے والے ایک سياہ فام شخص نے وارننگ دے دی۔

سیاہ فام شخص نے کہا ’مسٹر پریزڈینٹ، ڈونٹ ٹچ مائی گرل فرینڈ (صدر صاحب میری محبوبہ کو مت چھونا)۔

مائیک جونز نامی اس شخص کی محبوبہ اس وقت اوباما سے اگلے والے بوتھ میں ووٹ ڈال رہی تھیں اور وہ یہ سن کر زور سے ہنس پڑیں۔

اوباما نے بھی بغیر سر اٹھائے مسکراتے ہوئے جواب دیا: ’سچ پوچھو تو میرا ایسا کوئی ارادہ نہیں تھا۔‘

اور پھر انھوں نے مائیک جونز کی محبوبہ کوپر سے کہا: ’یہ ایک مثال ہے کہ کس طرح اپنا ہی ایک بھائی بلاوجہ مجھے شرمندہ کر رہا ہے۔‘

یہ ہلکی پھلی گفتگو ایک ٹی وی چینل کے کیمرے پر محفوظ ہو رہی تھی۔

اوباما نے کوپر سے کہا: ’جب آپ گھر لوٹیں گي اور اپنے دوستوں سے اس بارے میں بات کریں گی۔ مجھے یقین نہیں ہو رہا کہ مائیک کتنا بڑا بیوقوف ہے۔‘

اور پھر اوباما نے بازی مار ہی لی۔ انھوں نے چلنے سے پہلے کوپر کو گلے لگایا اور اسے چومتے ہوئے کہا: ’اب اسے بھی کچھ بات کرنے کا موقع ملے گا اور اسے سچ مچ جلن ہو رہی ہو گی۔‘

بعد میں کوپر نے ایک ٹی وی چینل کو انٹرویو میں کہا: ’مائیک اکثر اس طرح کی حرکتیں کرتا رہتا ہے لیکن اوباما نے اس مذاق کا برا نہیں مانا اور ہاں جب انھوں نے مجھے گلے لگایا اور چوما تو مجھے امید ہے کہ مشیل بھی مجھے معاف کر دیں گی۔‘

ان کے ساتھ بیٹھے مائیک کا کہنا تھا: ’پہلے میرا کوئی ارادہ نہیں تھا مذاق کا لیکن جب میں نے دیکھا کہ اوباما میری محبوبہ کے ساتھ والے بوتھ میں کھڑے ہیں تو مجھے یہ حرکت سوجھی۔‘

انھوں نے مسکراتے ہوئے کہا کہ جب اوباما نے ان کی محبوبہ کو چوما تو وہ سمجھ گئے کہ وہ ان سے بدلہ لے رہے ہیں۔