نائجیریا میں خودکش حملہ، کم از کم دس ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption یہ آزارے میں گذشتہ ایک ماہ میں ہونے والا تیسرا دھماکہ تھا

نائجیریا کے شمال مشرقی علاقے میں ایک خودکش حملے میں کم از کم دس افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوگئے ہیں۔

حکام کے مطابق یہ دھماکہ اتوار کو ریاست بوچی کے قصبے آزارے کے بازار میں ایک خاتون خودکش حملہ آور نے کیا۔

عینی شاہدین کے مطابق دھماکے میں مرنے والوں میں زیادہ تر دکاندار اور خریداری کے لیے آنے والے افراد شامل ہیں۔

یہ آزارے میں گذشتہ ایک ماہ میں ہونے والا تیسرا دھماکہ ہے۔

دھماکے کے بعد مقامی نوجوان سڑکوں پر نکل آئے اور سکیورٹی فراہم نہ کرنے پر ٹائر جلا کر حکومت کے خلاف احتجاج کرتے رہے۔

ادھر نائجیریا کی فوج کا کہنا ہے کہ اس نے چیبوک نامی اس شہر کا کنٹرول دوبارہ سنبھال لیا ہے جس پر شدت پسند تنظیم بوکوحرام کے ارکان نے جمعرات کو قبضہ کر لیا تھا۔

اطلاعات کے مطابق چیبوک پر قبضے کی جنگ میں سنیچر اور اتوار کو بوکوحرام کے متعدد جنگجو مارے گئے ہیں۔

اس جنگ میں نائجیریا کی فوج کے علاوہ مقامی ملیشیا بھی شریک ہوئی۔

فوج کے سرکاری ٹوئٹر اکاؤنٹ سے جاری پیغام میں کہا گیا ہے کہ ’فوجی فرار ہونے والے دہشت گردوں کا تعاقب اور ان کی گرفتاریاں جاری رکھیں گے۔ شہر میں حالات معمول پر لوٹ آئے ہیں۔‘

تاہم بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق متعدد شہریوں کا کہنا ہے کہ چیبوک کے نواحی علاقوں میں اب بھی شدت پسند موجود ہیں اس لیے وہ علاقہ محفوظ نہیں۔

چیبوک کے بہت سے رہائشی ملک کے دیگر محفوظ علاقوں کی جانب نقل مکانی کر چکے ہیں۔

خیال رہے کہ بوکوحرام نے گذشتہ ماہ حکومت کی جانب سے جنگ بندی پر رضامند ہونے کے دعووں کی تردید کی تھی۔

اسی بارے میں