’گرفتار ہونے والی خاتون البغدادی کی اہلیہ نہیں ہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption عراق کی وزارتِ خارجہ نے بدھ کو ایک بیان میں کہا ہے کہ گرفتار ہونے والی خاتون سجا الدلیمی عمر الدلیمی کی بہن ہیں جنھیں بصرہ اور البثا میں دھماکے کرنے کے الزام میں موت کی سزا سنائی گئی تھی

عراق کی وزارتِ خارجہ نے دولتِ اسلامیہ کے رہنما ابوبکر البغدادی کی اہلیہ کی لبنان میں گرفتاری کی تردید کی ہے۔

عراقی وزارتِ خارجہ کا کہنا ہے کہ لبنان میں گرفتار ہونے والی خاتون ابوبکر البغدادی کی اہلیہ نہیں ہیں۔

خیال رہے کہ منگل کو لبنان کی سکیورٹی فورسز نے شام کی سرحد کے قریب دولتِ اسلامیہ کے رہنما ابوبکر البغدادی کی اہلیہ اور ایک بیٹے کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔

عراق کی وزارتِ خارجہ نے بدھ کو ایک بیان میں کہا ہے کہ گرفتار ہونے والی خاتون سجا الدلیمی عمر الدلیمی کی بہن ہیں جنھیں بصرہ اور البثا میں دھماکے کرنے کے الزام میں موت کی سزا سنائی گئی تھی۔

لبنان کی فوجی انٹیلی جنس سروس نے دس روز قبل ایک خاتون اور ان کے بیٹے کو شام سے لبنان میں جعلی دستاویزات پر داخل ہونے پر گرفتار کیا تھا۔

دوسری جانب لبنان کا کہنا ہے کہ اس کے خیال میں گرفتار ہونے والی خاتون سجا الدلیمی ہی ابوبکر البغدادی کی اہلیہ ہیں، تاہم سرکاری طور پر اس بات کی تصدیق نہیں ہو سکی۔

لبنان کی فوج میں ایک ذریعے نے بی بی سی کو بتایا کہ عراقی حکومت کی جانب سے شائع ہونے والی تردید کے باوجود انھیں یقین ہے کہ گرفتار ہونے والی خاتون ابوبکر البغدادی کی اہلیہ ہیں۔

ادھر عراقی حکومت کا کہنا ہے کہ دولتِ اسلامیہ کے رہنما ابوبکر البغدادی کی بیویوں کے نام اسما فازوی محمد الدلیمی اور عصرہ محل ہیں۔

اس سے قبل لبنانی حکام نے منگل کو سجا الدلیمی کو شام میں رہنے والی عراقی خاتون قرار دیا تھا۔

عراقی حکومت کے مطابق سجا الدلیمی کے والد شدت پسند تنظیم القاعدہ کے رکن اور النصرۃ فرنٹ کے متحرک رکن ہیں۔

ایک بیان میں عراقی حکومت نے کہا کہ سجا کی بہن دعا عبدالحمید الدلیمی ہیں جنھیں اربیل میں ’خود کو دھماکے سے اڑانے کی کوشش‘ کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔

اسی بارے میں