ہیکنگ کے بعد جنوبی کوریا کمپنی مشق کرے گی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کسی ہیکر نے جمعے کو سوشل میڈیا پر جوہری ری ایکٹروں کا بلو پرنٹ جاری کر دیا تھا

جنوبی کوریا کے جوہری پلانٹ کے آپریٹروں نے سائبر حملوں کا مقابلہ کرنے کے لیے اپنی اہلیت جاننے کی مشق کرے گی۔

یہ مشق ڈیٹا کے افشا ہو جانے اور ایک ہیکر کی جانب سے دھمکی کے بعد کی جائے گی۔

گذشتہ ہفتے کوریا ہائیڈرو اور نیوکلئیر پاور کمپنی (کے ایچ این پی) کے اوزاروں کے استعمال کے کتابچے کو کسی گروپ یا شخص نے آن لائن پر جاری کر دیا تھا۔

اس کے ساتھ ایک انتباہ بھی جاری کیا گیا تھا کہ اگر کرسمس تک تین ری ایکٹر بند نہیں ہوتے تو لوگ ’اس سے دور ہی رہیں۔‘

کے ایچ این پی نے کہا ہے کہ افشا ہوجانے والے کتابچے سے ری ایکٹر کے تحفظ کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔

واضح رہے کہ کے ایچ این پی کوریا میں جوہری توانائی کا واحد آپریٹر ہے اور یہ حکومتی ادارے کوریا الکٹرک پاور کارپوریشن کا حصہ ہے۔

آپریٹر نے ایک بیان میں کہا کہ وہ چار جوہری پلانٹوں میں پیر اور منگل کو وسیع پیمانے پر مشقوں کا سلسلہ شروع کر رہا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ ThinkStock
Image caption کسی گروپ یا شخص نے اس کے ساتھ ایک انتباہ بھی جاری کیا گیا تھا کہ اگر کرسمس تک تین ری ایکٹر بند نہیں ہوتے تو لوگ ’اس سے دور ہی رہیں‘

’پریزیڈنٹ آف اینٹی نیو کلیئر ری ایکٹر گروپ‘ کے نام سے کسی ہیکر نے جمعے کو سوشل میڈیا پر جوہری ری ایکٹروں کا بلو پرنٹ جاری کر دیا تھا۔

جنوبی کوریا کی یون ہیپ نیوز ایجنسی کا کہنا ہے کہ 15 دسمبر کے بعد کی جانے والی اس قسم کی یہ تازہ ترین پوسٹ ہے۔

اس سے قبل انٹرنیٹ پر ڈالے جانے والے مواد میں ان جوہری ری ایکٹروں کی ایئر کنڈیشننگ اور کولنگ کے نظام کی تفصیلات شامل تھیں۔

اس کے علاوہ اس میں تابکاری کی زد میں آنے کی رپورٹ اور ملازمین کے ذاتی اعداد و شمار شامل تھے۔

حکام کا کہنا ہے کہ ہیکنگ کے سلسلے میں جانچ کی جا رہی ہے۔

کمپنی نے کہا ہے کہ ان میں شامل معلومات اصل ٹیکنالوجی کے متعلق نہیں ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption سونی پکچرز نے ایک دھمکی کے بعد اپنی فلم کی ریلیز ملتوی کردی ہے

جنوبی کوریا کی حکومت نے بی بی سی کو بتایا کہ ری ایکٹروں کا مرکزی آپریٹنگ نظام ہیک نہیں کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ کے ایچ این پی ملک میں 23 جوہری ری ایکٹر چلاتا ہے اور ملک کو 30 فی صد بجلی فراہم کرتا ہے۔

یہ واضح نہیں ہے کہ گذشتہ ماہ سونی پکچرز کے ہیکنگ معاملے سے اس ہیکنگ کا کوئی تعلق ہے۔

سونی پکچرز کی ہیکنگ میں غیر ریلیز شدہ فلموں کو آن لائن ڈال دیا گیا تھا اور امریکہ کا کہنا تھا کہ شمالی کوریا ان سائبر حملوں کے پیچھے ہے جبکہ پیانگ یانگ نے ان الزامات کی تردید کی ہے اور ایک مشترکہ تفتیش کی بات کہی ہے۔

اسی بارے میں