سعودی عرب: شاہ عبداللہ ہسپتال میں داخل

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption کمر میں تکلیف کے باعث شاہ عبداللہ کے دو آپریشن ہو چکے ہیں اور وہ تین ماہ تک امریکہ میں بھی زیر علاج رہ چکے ہیں

سعودی عرب کے علیل شاہ عبداللہ کی طبیعت بگڑنے پر انھیں علاج کے لیے ہسپتال میں داخل کرا دیا گیا ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق شاہی کورٹ نے بدھ کے روز جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا ہے کہ شاہ عبداللہ کو میڈیکل چیک اپ کے لیے ریاض کے عبدالعزیز میڈیکل سٹی میں داخل کروایا گیا ہے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق شاہ عبداللہ کی طویل عمر اور مختصر عرصے میں ان کی خراب صحت کے باعث شاہی خاندان کے مستقبل کے حوالے سے تحفظات کو جنم دیا ہے۔

شاہ عبداللہ کے77 سالہ سوتیلے بھائی شہزادہ سلمان کو دو برس قبل شہزادہ نائف بن عبدالعزیز کی وفات کے بعد ولی عہد نامزد کیا گیا تھا۔

شاہ عبداللہ کی انتہائی خراب صحت کے باعث گذشتہ کچھ عرصے سے شہزادہ سلمان ہی مختلف تقریبات میں ان کی نمائندگی کرتے آئے ہیں۔

رواں سال کے اوائل میں شہزادہ مقرن بن عبدالعزیز کو نائب ولی عہد نامزد کیا گیا تھا۔

ایک لمبے عرصے سے شاہ عبداللہ کے منظر عام پر نہ آنے سے سوشل میڈیا پر گذشتہ سال سے ان کی طبیعت انتہائی ناساز ہونے کی افواہیں گردش کرنے لگی تھیں۔

کمر میں تکلیف کے باعث ان کے دو آپریشن ہو چکے ہیں جن میں 13 گھنٹے کا ایک طویل آپریشن بھی شامل ہے۔ 2010 میں وہ تین ماہ تک امریکہ میں بھی زیر علاج رہ چکے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ایک لمبے عرصے سے شاہ عبداللہ کے منظر عام پر نہ آنے سے سوشل میڈیا پر گزشتہ سال سے ان کی طبیعت انتہائی ناساز ہونے کی افواہیں گردش کر نے لگی تھیں

شاہ عبداللہ نے 2005 میں سعودی عرب کا اقتدار سنبھالا تھا، ان کی عمر 91 برس بتائی جاتی ہے لیکن سرکاری ذرائع ان کی صحیح عمر پر کوئی واضح موقف نہیں رکھتے۔

برطانوی خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق شاہ عبداللہ کے ہسپتال میں داخل ہونے کی خبر کے بعد تیل کی قیمت میں کمی کے باعث مندی کا شکار سعودی بازارِ حصص مزید پانچ پوائنٹس گر گیا ہے۔

فی الحال تو عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتیں اس خبر سے متاثر نہیں ہوئی ہیں لیکن سعودی عرب کے تیل پیدا کرنے والے دنیا کے سب سے بڑے ملک ہونے کے باعث تیل کی قیمتیں متاثر ہو سکتی ہیں۔