آکسفرڈ شائر میں آتشزدگی، کونسل کی عمارت تباہ

آکسفرڈشائر تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption آگ بجھانے والے عملے کو صورتِ حال پر مکمل قابو پانے میں ابھی وقت لگے گا

برطانیہ کی کاؤنٹی آکسفرڈشائر کی کونسل کے دفاتر اور دو دیگر عمارتوں کو مبینہ طور پر آگ لگا دی گئی ہے۔ اطلاع ہے کہ آتشزدگی کے اس واقعے میں گیس کے کنستر بھی استعمال کیے گئے ہیں۔

جن عمارتوں کو آگ لگی ہے ان میں کونسل کے دفاتر، فیونرل پارلر یا جنازوں کا انتظام کرنے والی دکان اور ایک گھر شامل ہے۔

اطلاعات کے مطابق کرومارش گفرڈ میں واقع کونسل کی اس عمارت سے ایک کار آ کر ٹکرائی تھی۔

تینوں عمارتوں میں سے گیس کے کنستر بھی دریافت ہوئے ہیں۔ ایک مشتبہ شخص کو روک کے علاقے سے پکڑا گیا ہے جس کے گھر سے بھی گیس کے کنستر ملے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ وہ تحقیق کر رہے ہیں کہ آتشزدگی کے ان تینوں واقعات میں کوئی لنک ہے کہ نہیں۔

پولیس سپرنٹنڈنٹ اینڈی بوئڈ کہتے ہیں کہ ’ہم روک میں ایک اور پتے کی تلاشی لے رہے ہیں۔ وہاں بھی گیس کے کنستر پائے گئے ہیں۔‘

’ہم نے بم ڈسپوزل سکواڈ (ای او ڈی) کی خدمات حاصل کی ہیں تاکہ یہ معلوم کیا جا سکے کہ وہ جگہ محفوظ ہے اور دوپہر کے بعد پولیس آفیسر اس کی تلاشی لے سکتے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption کہا جا رہا ہے کہ آگ گیس کے کنستروں سے لگائی گئی ہے

کونسل کے دفاتر پر لگنے والی آگ پر قابو پا لیا گیا ہے لیکن لگتا ہے کہ آگ بجھانے والا عملہ یہاں کافی دیر موجود رہے گا۔

آکسفرڈشائر کے چیف فائر آفیسر ڈیو ایتھرج نے بی بی سی کو بتایا کہ ’اس وقت تک تو ہمارا خیال ہے کہ تمام جگہوں پر گیس کے کنستر استعمال کیے گئے ہیں۔‘

انھوں نے کہا کہ یہ 150 لوگوں پر مشتمل آگ بجھانے والے عملے کے لیے ایک چیلنجنگ رات ہو گی۔

ایک عینی شاہد کارل مچل شیلڈ نے کہا کہ انھوں نے کونسل کی عمارت کی دہلیز پر ایک بری طرح جلی ہوئی کار دیکھی ہے۔

’ہم سوچ رہے ہیں کہ آیا کوئی حادثاتی طور پر کار یہاں لے آیا یا جان بوجھ کر دہلیز میں کار ماری گئی۔ لیکن یقیناً یہی لگتا ہے کہ آگ یہاں سے شروع ہوئی تھی۔‘

’اور یہی وہ حصہ ہے جسے سب سے زیادہ نقصان ہوا ہے۔‘

فیونرل پارلر کے مالک الیسٹئر کوکس نے کہا کہ ’انھوں نے ہمارے سامنے والے دروازے سے ایک بڑا کنستر رکھ کر آگ لگائی۔ میرے والد نے ہماری جگہ سے ایک کار کو جاتے دیکھا، جو گھوم کر کونسل کے دفاتر تک گئی اور ایسا لگتا ہے کہ انھوں نے وہاں بھی وہی کیا۔‘

پولیس کا کہنا ہے کہ آتشزدگی کے واقعات میں کسی کے بھی زخمی ہونے کی اطلاع نہیں ہے اور عمارتوں کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔

ایک مقامی شخص کو شک کی بنا پر گرفتار کیا گیا ہے اور وہ زیرِحراست ہے۔

اسی بارے میں