سعودی بلاگر کو دوسری بار کوڑے لگانے کی سزا ملتوی

سعودی بلاگر تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption سعودی بلاگر کو توہینِ مذہب اور سرکشی کے الزام میں کوڑوں کی سزا سنائی گئی تھی

سعودی عرب نے بلاگر رائف بدوی کی کوڑوں کی سزا پر طبی وجوہات کی بنا پر عمل درآمد روک دیا ہے۔

سعودی بلاگر کو جمعہ کی نماز کے بعد سائبر کرائم اور سرکشی کے الزام میں دوسری بار سرِعام کوڑے لگائے جانے تھے۔

گزشتہ مئی رائف بدوی کو 1000 کوڑوں اور دس سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔

گزشتہ جمعے کو بدوی کو 50 کوڑے مارے گئے تھے جس پر پوری دنیا میں احتجاج کیا گیا۔ سعودی عرب نے اس احتجاج پر کوئی ردِ عمل ظاہر نہیں کیا ہے۔

سعودی عرب نے رائف کی صحت اور ان کی باقی سزا کو ملتوی کیے جانے پر ابھی کوئی بیان نہیں دیا ہے۔

کہا جا رہا ہے کہ سزا کے مطابق ان کو ہر ہفتے کوڑے مارے جانے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption دنیا بھر میں رائف بدوی کو کوڑوں کی سزا دیے جانے کے خلاف احتجاج کیا گیا تھا

ہیومن رائٹس کی تنظیم ایمنسٹی نے ایک بیان میں کہا کہ رائف بدوی کا معائنہ ڈاکٹر نے کیا اور ان کو لگا کہ گزشتہ ہفتے بدوی کو لگائے گئے کوڑوں کی وجہ سے آنے والے زخم ابھی بھرے نہیں ہیں اور وہ مزید کوڑے کھانے کے قابل نہیں ہیں۔

ایمنسٹی کے مطابق ڈاکٹر نے مطالبہ کیا کہ سزا کو اگلے ہفتے تک ملتوی کر دیا جائے۔

بدوی سعودی عرب میں ایک انٹرنیٹ ویب سائٹ ’لبرل سعودی نیٹ ورک‘ کے بانی ہیں اور انھیں 2012 میں توہینِ مذہب کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا اور ان کی ویب سائٹ بند کر دی گئی تھی۔

حقوق انسانی کی عالمی تنظیم ایمنیسٹی انٹرنیشنل نے بدوی کو دی جانے والا سزا کو شرمناک قرار دیتے ہوئے اسے ختم کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

اسی بارے میں