داعش کے جنگجوؤں کی پسپائی، کرد کوبانی پر ’قابض‘

وائی پی جی تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption کرد وائی پی جی میں خواتین کی ایک بڑی تعداد شامل ہے

اطلاعات کے مطابق کرد فورسز نے داعش کے جنگجوؤں کو کوبانی سے نکال دیا ہے۔ اس طرح شام کے شمالی شہر کے کنٹرول کے لیے چار ماہ سے لڑی جانے والی لڑائی ختم ہو گئی ہے۔

کہا جا رہا ہے کہ پاپولر پروٹیکشن یونٹس (وائی پی جی) کے جنگجو داعش کے جہادیوں کی پسپائی کے بعد شہر کے شمالی مضافاتی علاقوں میں داخل ہونا شروع ہو گئے ہیں۔

ایسی بھی اطلاعات آ رہی ہیں کہ لوگ سڑکوں پر نکل کر جشن منا رہے ہیں اور ہوائی فائرنگ کر رہے ہیں۔

کوبانی کی جنگ کو امریکہ کی سربراہی والے اتحاد کے لیے ایک اہم ٹیسٹ کے طور پر دیکھا جا رہا ہے کیونکہ اتحادی طیارے داعش کے ٹھکانوں پر فضائی حملے کر کے اسے پسپا کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ستمبر میں یہاں داعش کے حملے کے بعد کرد اکثریت کے اس علاقے سے 160,000 سے زیادہ لوگ ہجرت کر کے قریبی ترکی کے سرحدی علاقوں میں پناہ لے چکے ہیں۔

برطانیہ میں مقیم سرگرم گروہ سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق کوبانی کی جنگ میں اب تک 1,600 افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

اسی بارے میں